پنجاب اسمبلی: ٹیکس کلکشن کےلئے فنانس بل کی منظوری

فائل فوٹو

فائل فوٹو

پنجاب اسمبلی نے ٹیکس کلیکشن کا دائرہ کار وسیع کرنے کےلئے اکثریت رائے سے فنانس بل کی منظوری دے دی۔ اپوزیشن نے اسمبلی کارروائی میں عدم دلچسپی کا اظہار کیا۔ ایوان نے تین آرڈیننس کے نفاذ کی مدت میں بھی توسیع کر دی۔

پنجاب اسمبلی کی طرف سے منظور کردہ فنانس بل کے بعد حکیم، ٹھیکیدار، پراپرٹی ڈیلرز، اسٹاک بروکرز، منی چینجرز اور ڈاکٹرز بھی ٹٰیکس نیٹ میں شامل ہو گئے۔ ایک لاکھ روپے تک سرمائے والی کمپنی پر 10 ہزار روپے سالانہ ٹیکس لاگو ہو گا۔ وکلا پر ایک ہزار، اسٹاک ایکسچینج ممبران پر 10 ہزار اور منی چینجرز پر 6 ہزار روپے ٹیکس عائد کرنے کی بھی منظوری دے دی گئی۔

موٹر سائیکل ڈیلرز پر 6 ہزار سے 10 ہزار، رجسٹرڈ میڈیکل پریکٹیشنر پر 4 ہزار، ہومیو پیتھک اور حکیم پر 3 ہزار، جیولرز، کیبل آپریٹرز پر 2 ہزار جبکہ سگریٹ اور تمباکو کے کاروبار پر 4 ہزار روپے ٹیکس عائد کر دیا گیا۔

پنجاب اسمبلی نے زکوة و عشر، کھل پنچائت اور پنجاب لینڈ ریونیو آرڈیننسز کے نفاذ کی مدت میں تین ماہ توسیع کی منظوری دے دی۔

loading...
loading...