بالاکوٹ حملے کے حوالے سے نئی بھڑک، مودی کا مذاق بن گیا

modi

بھارت میں وزیراعظم کےچناؤ کیلئے ہونےو الے عام انتخابات اپنے آخری مراحل میں داخل ہوگئے ہیں۔حکمراں جماعت بھارتی جنتا پارٹی  بھارت پر اپنی حکمرانی قائم رکھنے کیلئےایڑھی چوٹی کا زور لگارہی ہے۔بی جے پی  اس بار بھی انتخابی مہم کیلئے پاکستان دشمنی کا سہارا لے رہی ہے اور پلواما واقعے کے بعد کھل کر مہم جوئی کررہی ہے۔بھارت نے پلواما واقعے میں اپنی انٹیلی جنس کی ناکامی پر پردہ ڈالتے ہوئے سارا ملبہ پاکستان پر ڈال کر بالاکوٹ حملے کا ڈراما رچایا۔

حال ہی میں نریندر مودی کی جانب سے دیے جانے والے ایک انٹرویو نے بھارت میں ایک نئی بحث کا آغاز کردیا ہے۔

بھارتی وزیر اعظم نے کہا ہے کہ بھارتی فضائیہ خراب موسم کی وجہ سے بالاکوٹ پر کی جانی والی  ایئر اسٹرائیک ملتوی کر رہی تھے۔ انہوں نے بھارتی فضائیہ کو ایئر اسٹرائیک کیلئے جانے کا کہا کیونکہ آسمان پربادلوں کا موجود ہوناان  کیلئے فائدہ مند ہوسکتا ہے کہ ان کے جہاز ریڈار پر نہیں آئیں گے۔

حریف جماعت کانگریس نے ٹوئٹر پر مودی کی بھڑک پر طنز کرتے ہوئے شعر کسا کہ جملہ ہی پھینکتا رہا پانچ سال کی سرکار میں، سوچا تھا کلاؤڈی ہے موسم نہیں آؤنگا ریڈار میں۔

کانگریس کے ایک ترجمان سلمان انیس سوز نے اپنے مختلف ٹویٹس میں کہا کہ ‘شاید کسی نے وزیر اعظم کو ریڈار کے کام کرنے کے نظام کے بارے میں نہیں بتایا۔ یہ قومی سلامتی کا بہت سنجیدہ معاملہ ہے۔ یہ ہنسنے کی بات نہیں ہے’۔

 

سابق وزیر اعلیٰ جمو ں و کشمیر عمر عبداللہ نے مودی کا مذاق اڑاتے ہوئے لکھا’پاکستانی ریڈار بادلوں میں داخل نہیں ہو سکتا۔ یہ فوجی حکمت عملی کی بہت ہی اہم معلومات ہے اور مستقبل کے ايئر سٹرائیکس کی منصوبہ بندی میں یہ انتہائی اہمیت کا حامل ہوگا’۔

 

گلوکاروشال دادلانی نے ٹویٹ کیا ‘مودی جی ایک شہری کی جانب سے چھوٹی سی گزارش ہے۔ سائنس حقیقی چیز ہے۔ بولنے سے پہلے کسی قابل آدمی سے مشورہ کر لیں۔ ہندوستانیوں کو دنیا کی نظروں میں شرمندہ نہ کریں۔ کم سے کم اس وقت تک جب تک کہ (انتخابی) نتائج کا اعلان نہیں ہو جاتا۔ آپ ابھی ہمارے وزیر اعظم ہیں۔ کم سے کم اس بات کا خیال رکھیں کہ انڈیا کی کتنی عزت ہے’۔

بھارتی وزیر اعظم کی جانب سے ماری جانے والی بھڑک پر بھارتی سوشل میڈیا صارفین نے انہیں خوب آڑھے ہاتھوں لیا۔

 

ایک صارف کا کہنا تھا کہ ہم یہ بحث کیوں نہیں کررہے کہ کیا ہمیں بندر کو استرا دینا چاہیئے یا نہیں؟اور اگر دےدیا تو اس سے کس کو نقصان پہنچے گا، بندر کو یا لوگوں کو؟

 

ایک اور صارف کا کہنا تھامودی کی ریڈار اور بادلوں کے متعلق تھیوری  اس بات کی دلیل ہے کہ ہمیں تعلیم کیلئے بھاری بجٹ درکار ہے۔

 

ایک صارف نے کہا بھارتی فضائیہ کے چیف مودی کے بادل اور ریڈار کے  متعلق بیان پر خاموش کیوں ہیں؟

 

 

loading...
loading...