صدر ٹرمپ نے امریکا کیلئے نئے دور کے آغاز کا دعویٰ کردیا

فائل فوٹو

فائل فوٹو

واشنگٹن ڈی سی :پہلے اسٹیٹ آف یونین خطاب میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نےامریکا کیلئے نئے دور کے آغاز کا دعویٰ کردیا۔

صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکی خواب کو پورا کرنے کا اس سے بہتر لمحہ کبھی نہیں آیا۔ امریکا میں نئے دور کا آغاز ہونے جارہا ہے جس کیلئے حریف جماعت ڈیموکریٹک پارٹی کے ارکان کی طرف کھلا ہاتھ بڑھا رہا ہوں تاکہ دونوں مل کر کام کر سکیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹیکس اصلاحات کا خلاصہ کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی امریکی جوڑے پرپہلے 24 ہزارڈالرپرکوئی ٹیکس نہیں۔ امریکی کمپنیوں پرٹیکس 35 سے کم کرکے 21 فیصد کردیا۔ٹیکس میں کٹوتی اپنے وعدے کے مطابق کی اور ضرورت مند طبقے کیلئے ٹیکس فری ماحول فراہم کررہے ہیں۔

امریکی صدر نے اوباما ہیلتھ کیئر کو نقصان دے قرار دیا اور ساتھ ہی امریکیوں کی خدمت نہ کرنے والے ملازمین کو نکالنے کا پلان بھی بتایا۔

ان کا کہنا تھا کہ اوباما ہیلتھ کیئرسے نقصان ہوا اوراب انفرادی مینڈیٹ کا دورگیا۔ امریکیوں کی خدمت نہ کرنے والے ملازمین کونکال دیں گے۔ ملک کیلئے باصلاحیت افرادکی خدمات حاصل کررہے ہیں۔ معاشی طورپرہارماننے کا دورنہیں رہا۔

امریکی صدر کا امیگریشن قوانین کو درست کرنے پر زور دیتے ہوئے کہنا تھا کہ منشیات فروشوں اوراسمگلرزکے خلاف قوانین سخت ہونے چاہیئں۔

میگرنٹس کوکم افراد امریکا لانے کی اجازت ہونی چاہیئے۔ نئی قانون سازی سے جرائم پیشہ گینگزنےامریکی امیگریشن قوانین کا فائدہ اٹھایا جسے اب درست کریں گے۔ کھلی سرحدوں کا مطلب امریکا میں گینگزاورمنشیات کی آمد ہے۔ میں چاہتا ہوں کہ ہرامریکی شہری اورہربچہ محفوظ ہو اور امریکی عوام مضبوط ہونے کے سبب اسٹیٹ آف دی یونین بھی مضبوط ہے۔

امریکی صدر نے خطاب شروع کرنے سے پہلے امریکی ہیروز کی قربانیوں کو بھی سراہا۔

loading...
loading...