اسرائیلی دارالحکومت کے متعلق امریکی فیصلے پر عالمی برادری کی مذمت

فائل فوٹو

فائل فوٹو

مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی فیصلےپر عالم اسلام سمیت پوری دنیا سے امریکی اقدام کی مذمت کی جارہی ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلان سے عالمی برادری تشویش میں مبتلاہوگئی ہے۔پاکستان سمیت دنیا بھر میں مظاہرے اور امریکا کی مذمت کی جارہی ہے۔

حماس نے اسرائیل کے خلاف تحریک انتفادہ شروع کرنے کا مطالبہ کردیا ہے۔

اسرائیلی فورسز اور فلسطینیوں میں جھڑپیں شروع ہوگئی ہیں۔فلسطینیوں نے سڑکوں پر ٹائر جلائے۔

اسرائیلی فورسز نے انہیں منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس پھینکی۔

سعودی عرب نے کہا کہ فیصلہ ‘بلاجواز اور غیر ذمہ دارانہ’ ہے۔

ایران نے کہا کہ ‘اسرائیل کے خلاف ایک اور انتفادہ شروع ہو سکتی ہے۔

ترکی، اردن، لبنان، اور مصر نے بھی امریکی فیصلے کی شدید مذمت کی۔

ترکی کے دارالحکومت استنبول میں امریکی قونصلیٹ کے باہر بڑا مظاہرہ ہوا۔

فرانس، بولیویا، مصر، اٹلی، سینیگال، سویڈن، برطانیہ اور یوراگوائے کے مطالبے پر اقوام متحدہ کا ہنگامی اجلاس کل ہورہا ہے۔

اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گرتیرس نے یروشلیم پر اسرائیلی حاکمیت کے حوالے سے صدر ٹرمپ کے اقدام کو سختی سے مسترد کر دیا۔

یورپی یونین کی فارن پالیسی کی سربراہ فیڈریکا مگیرینی نے صدر ٹرمپ کے اقدام پر’شدید تشویش’ کا اظہار کیا ہے۔

جرمنی نے کہا کہ امریکی صدر کے فیصلے کی کسی صورت حمایت نہیں کی جاسکتی۔