اسرائیلی دارالحکومت معاملہ: اقوام متحدہ نے جمعے کو ہنگامی اجلاس طلب کرلیا

فائل فوٹو

فائل فوٹو

نیویارک:مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قراردینے کے متنازع امریکی فیصلے پراقوام متحدہ نے  جمعہ کوہنگامی اجلاس طلب کرلیا ۔

مقبوضہ بیت المقدس کواسرائیل کا دارالحکومت قراردینے کے فیصلے کوعالمی سطح پرتنقید کا سامنا ہے۔

 بولیویا، مصر، فرانس، اٹلی، سینیگال، سوئیڈن، برطانیہ اوریوروگوئے نے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے اقوام متحدہ کا ہنگامی اجلاس طلب کرنے کی درخواست کی۔

جس پراقوام متحدہ نے جمعے کوہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔

عرب لیگ نے بھی معاملے پراپنا ہنگامی اجلاس ہفتے کو طلب کرلیا ہے۔

عرب ٹی وی کے مطابق عرب لیگ کا اجلاس فلسطین اور اردن کی درخواست پر قاہرہ میں منعقد ہوگا۔

 جس میں  امریکا کی بیت المقدس کواسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے خلاف مشترکہ حکمت عملی پر غور کیا جائےگا۔

دوسری جانب ترکی کے صدر رجب طیب اردوان نے بھی اسلامی تعاون تنظیم اوآئی سی کا ہنگامی سربراہی اجلاس 13 دسمبر کو استنبول میں طلب کرلیا ہے۔

گزشتہ روز صدررجب طیب اردوان نے دھمکی دی تھی کہ اگر امریکا نے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کیا تو ان کا ملک اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کردے گا۔

ادھر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ فلسطینی،اسرائیلی قیادت کومذاکرات کی میزپرآناہوگا۔دو ریاستی حل کے علاوہ کوئی حل ممکن نہیں،کسی پلان بی کو ماننے کیلئے تیار نہیں ہیں۔

گزشتہ برس دسمبرمیں اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل میں ایک قراردادپاس کی گئی تھی جس کے تحت بیت المقدس کے حوالے سے چارجون1967 کے طے شدہ خطوط میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔ کوئی بھی تبدیلی دونوں ممالک کے مذاکرات کے ذریعے متفق ہونے پرکی جائے گی۔