ہر برس دنیا بھر میں 5 کھرب پلاسٹک کی تھیلیاں استعمال کی جاتی ہیں: تحقیق

qq

دنیا بھر میں بنائی جانے والی پلاسٹک کا صرف 10فیصد دوبارہ استعمال کیا جاتا ہے۔ حکومتوں کو اس پر پابندی لگانے یا ایک بار استعمال ہونےوالے بیگز یا برتنوں پر ٹیکس لگانے کے متعلق سوچناچاہیئے۔

یہ دعویٰ اقوامِ متحدہ کی جانب سے کی جانے والی ایک تحقیق کے میں سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے حکومت  کے ایک بار استعمال کی جانے والی پلاسٹک کی روک تھام  کیلئے لیے جانے والے اقدامات کی پڑتال کی۔

تحقیق میں معلوم ہوا کہ دنیا بھر میں ہر برس پانچ کھرب پلاسٹک کی تھیلیاں استعمال کی جاتی ہیں۔ جو اگر پھیلی ہوئی ہوں تو فرانس سے دُگنے رقبے کو ڈھک دیں گی۔

رپورٹ کے مطابق 60سے زائد ممالک اب پلاسٹک کی آلودگی کو کم کرنے کیلئے اقدامات کررہے ہیں۔

تاہم پلاسٹک کے فضلہ کو کم کرنے کی پالیسیاں متعدد ممالک میں خراب انتظام کے سبب ناکام ہوئی ہیں۔

یہ رپورٹ عالمی ماحولیات کے دن جاری کی گئی، جو اس برس بھارت پر مبنی ہے اور اس کا مرکز پلاسٹک کی آلودگی ہے۔

اقوام متحدہ کی جانب سے جاری ہونے والی رپورٹ میں نعرہ دیا گیا ہے کہ اگر آپ اس کو دوبارہ استعمال نہیں کرستے تو اس کو رد کردیں۔

Daily mail بشکریہ

loading...
loading...