معاشرے کی نظر میں ‘اچھی لڑکیاں’ کیسی ہوتی ہیں؟

2

زندگی میں کبھی نہ کبھی کسی موڑ پر ہر لڑکی کا سامنا ‘اچھی لڑکی’ جیسے جملے سے ضرور ہوتا ہے۔ جیسے کہ اچھی لڑکی گھر سے نہیں نکلتی، اچھی لڑکی زیادہ بات نہیں کرتی اور اس جیسے اور بہت سےجملے۔

یہ الفاظ ظاہر کر تے ہیں کہ ایک لڑکی کی زندگی ان الفاظ کے پنجرے میں ہی ٹھیک رہ سکتی ہے اور اس پنجرے کو توڑنا اسے بہت نقصان پہنچا سکتا ہے۔

آج ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں کہ سوسائٹی کی نظر میں اچھی لڑکیاں کیسی ہونی چاہئیں۔

اچھی لڑکیاں زیادہ ہنستی نہیں ہیں۔

اچھی لڑکیاں صرف پڑھائی اور گھر کے کاموں پر دھیان دیتی ہیں۔

اچھی لڑکیاں بلا وجہ گھر سے باہر نہیں جاتیں۔

اچھی لڑکیاں سب کا کہنا مانتی ہیں۔

ایک فیس بک صارف مریم موسیٰ نے اس معاملے کو چیلنج کیا اور آواز اُٹھائی کہ سوسائٹی سے ان عجیب تصورات کا خاتمہ ہونا چاہیئے، جو لڑکی کو معاشرے میں کھل کر جینے نہیں دیتے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ خواتین کو اس معاملے کے حل کے لئے خود بھی آواز اُٹھانی ہوگی اور ان رُکاوٹوں کو ختم کرنا ہوگا۔ ہمیں دوسروں کے تصوارت کے ترازوؤں میں خود کو تولنا بند کرنا ہوگا۔

جب مریم سے پوچھا گیا کو انہوں نے اس معاملے پر آواز بلند کرنے کا کیوں سوچا یا انہیں یہ خیال کیوں آیا تو ان کا کہنا تھا کہ ‘میں 300 سے زائد خواتین پر مشتمل ایک ٹیم کے ساتھ کام کر رہی ہوں اور روزانہ ہزاروں طالب علموں سے میری بات ہوتی ہے۔ ان سے گفتگو کے بعد مجھے اس بات کا اندازہ ہوا ہے کہ وہ خواتین اور لڑکیاں بھی اپنی زندگی میں بہت کچھ کرنا چاہتی ہیں، لیکن انہیں بھی یہ بات روک دیتی ہے کہ اگر وہ ایسا کریں گی تو ‘لوگ کیا کہیں’ گے۔

بشکریہ : mangobaaz

loading...
loading...