محبت میں مبتلا ہو کر 65000 میسج کرنے والی خاتون گرفتار

messageفینکس کے شہر میں رہنے والی ایک 31 سالہ خاتون پر محبت میں مبتلا ہونے کے جرم میں متعدد مقدمے دائر کر دئے گئے۔ جیکولین نامی اس خاتون نے اپنے دوست کو 65 ہزار ٹیکسٹ میسج کر ڈالے۔

جیکولین نامی یہ خاتون ڈیٹنگ ویبسائٹ پر ایک شخص سے ملیں اور حقیقت میں پہلی ہی ملاقات کے بعد ہی اس کے عشق میں مبتلا ہوگئیں۔

پولیس نے جیکولین کو سوشل میڈیا پر اس شخص کا پیچھا کرنے، ہراساں کرنے اور عدالت میں پیش نہ ہونے کے جرم میں حراست میں لے کر مقدمہ درج کرلیا۔

جیکولین کا کہنا تھا کہ انہیں اس شخص سے ملنے کے بعد ایسا لگا کہ انہیں ان کا صحیح جیون ساتھی مل گیا ہے اور اب وہ دونوں محبت میں مبتلا ہو کر شادی کر لیں گے۔ انہوں نے اس کو اتنے میسجز اس کے عشق میں مبتلا ہو کر کئے۔

پولیس کے مطابق ان 65 ہزار میسجز میں چھوڑ جانے پر قتل کی دھمکیاں دی گئی تھیں۔

ان کے بیجے گئے میسجز کچھ یوں تھے۔

‘میں تمہیں قتل کر کے قاتلہ نہیں بننا چاہتی’، ‘ میں نئے زمانے کی ہٹلر ہوں’ اور ‘تمہارے خون سے میں نہانا پسند کروں گی’۔

حکام کا کہنا ہے کہ جیکولین جس دن اس شخص سے ملی اس دن سے اسے دن میں کم از کم 500 میسیج کرتی رہی ہے۔ لیکن میسجز کا یہ زور پچھلے مہینے سے زیادہ بڑھ گیا ہے۔

البتہ جیکولین کا کہنا ہے کہ ان کا خیال تھا انہیں اس سے بھی زیادہ میسج بھیجنے چاہیئے تھے۔ محبت ایک جنونی چیز ہے۔

Thanks to HuffPost

loading...
loading...