سن اسکرین کا مستقل استعمال وٹامن ڈی کی کمی کا سبب بن سکتا ہے: تحقیق

فائل فوٹو

فائل فوٹو

سن اسکرین جِلد کو سورج کی شعاعوں سے بچانے کیلئے جانی جاتی ہیں۔ تاہم ایک نئی تحقیق کے مطابق معاملہ کچھ اور ہے۔

سن اسکرین کا مستقل استعمال وٹامن ڈی کی کمی ، پٹھوں کی کمزوری اور ہڈیوں کے فریکچر کا سبب بن سکتا ہے۔

محققین نے دعویٰ کیا ہے کہ دنیا بھر سے تقریباً ایک ارب لوگ وٹامن ڈی کی کمی کا شکار ہیں کیوں کہ وہ سن اسکرین کا استعمال کرتے ہیں اور انہیں ان کی ضرورت کے مطابق سورج کی دھوپ نہیں ملتی۔

کیلیفورنیا کی ٹورو یونیورسٹی  کے اسسٹنٹ پروفیسر کم فوٹنہار کا کہنا تھا کہ لوگ باہر کم وقت گزاررہے ہیں اور جب وہ باہر جاتے ہیں تو سن اسکرین لگا لیتے ہیں، جو ان کے جسم کی وٹامن ڈی بنانے کی صلاحیت کو ختم کر دیتی ہے۔

وٹامن ڈی تب بنتا ہے جب جِلد پر سورج کی روشنی پڑتی ہے۔ جسم کے نظام میں وٹامن ڈی کا اہم کردار ہوتا ہے جس میں خلیوں کی نشو نما، قوتِ مدافعت اور سوزش کی کمی شامل ہیں۔

ہفتے میں دو بار پانچ سے 30منٹ تک سورج کی روشنی میں گزارنے سے صحت مند وٹامن ڈی کی سطح کے اضافے اور اس کے برقرار رہنے میں مدد مل سکتی ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ  اس دورانیے میں سن اسکرین لگا نے سے گریز کیا جائے کیوں کہ ایس پی ایف 15 یا اس سے زیادہ وٹامن ڈی3کے بننے کا عمل 99فیصد تک کم کردیتا ہے۔

بشکریہ زی نیوز