شین وارن، یاسر شاہ یا عادل رشید؟

112

لندن: بھارتی ٹیم ان دنوں دورہ انگلینڈ پر موجود ہے جہاں گزشتہ دنوں پانچ میچز پر مشتمل ٹیسٹ سیریز کھیلی گئی، اس سیریز میں بھارت کو بری طرح 1-4 سے شکست کھانی پڑی۔

ٹیسٹ رینکنگ میں نمبر ون پوزیشن پر براجمان بھارتی کرکٹ ٹیم اس سیریز میں بری طرح ناکام رہی، پہلے اور دوسرے ٹیسٹ میں شکست کے بعد تیسرے میں فتح حاصل کرکے کچھ مزاحمت کا مظاہرہ تو کیا مگر چوتھے اور پانچویں ٹیسٹ میں شکست نے نمبر ون بیٹنگ لائن کہلائی جانے والی ٹیم کی کارکردگی کا بھانڈا پھوڑ دیا۔

بھارتی کرکٹ ٹیم ابتداء سے ہی ملک سے باہر کوئی خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں کرسکی ہے، اگر ملک سے باہر کھیلے گئے میچز اور فتوحات پر نظر ڈالی جائے تو یہ بات کہنا غلط نہ ہوگا کہ بھارتی کرکٹ ٹیم گھر کی شیر ہے۔

خیر یہ سب بات تو اپنی جگہ مگر پانچویں ٹیسٹ میچ کے آخری روز بھارتی بلے بازوں لوکیش راہول اور رشبھ پانٹ نے بہترین شراکت داری قائم کرکے میچ میں کسی حد تک جان ڈال دی تھی۔ دونوں بلے بازوں نے سینچریاں اسکور کیں اور اپنی ٹیم کو ایک اچھی پوزیشن میں لے آئے تھے۔

اسی دوران انگلینڈ کے دائیں ہاتھ سے بولنگ کرنے والے لیگ اسپنر عادل رشید نے ایک ایسی گیند ڈلیور کر ڈالی جسے ‘اَن پلے ایبل’ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا، اس گیند پر بلے باز لوکیش راہول مکمل بِیٹ ہوئے اور بولڈ ہوگئے۔

تیزی سے ٹرن ہونے والی اس گیند نے میچ کا پاسا پلٹ دیا اور انگلینڈ باآسانی یہ میچ 118 رنز سے جیتنے میں کامیاب رہا۔

تاہم اس گیند کے چرچے سوشل میڈیا پر خوب سنائی دیئے، صارفین کی جانب سے شین وارن، یاسر شاہ اور عادل رشید کی ان گیندوں کے درمیان موازنہ کیا جارہا ہے اور اب یہ بحث چھِڑ گئی ہے کہ ان تینوں میں سے سب سے خطرناک گیند کس گیند باز نے ڈلیور کی۔

ویڈیو آپ بھی ملاحظہ کریں۔۔۔

loading...
loading...