فیفا ورلڈ کپ 2018میں کونسے گول کیپر توجہ کا مرکز بن سکتے ہیں؟

keeper

فٹبال کی دنیا میں عموماً اسٹرائیکر ز کا بول بالا ہوتا ہے لیکن ٹیم کا گول کیپر ایک ایسا کھلاڑی ہوتا ہے جس کو اس کے کردار کے مطابق اہمیت  نہیں دی جاتی ۔ ان کی اجرت اور ان کا وقار  اس بات کا ثبوت ہے۔

تاہم متعدد گول کیپر اپنی زبردست کارکردگیوں سے رواں ماہ سے شروع ہونے والے ورلڈ کپ میں سب کو چونکانے والے ہیں۔

آئیے ہم آپ کو بتاتے ہیں ان بانچ گول کیپروں کے متعلق جو فیفا ورلڈ 2018میں لوگوں کی توجہ کا مرکز ہوں گے۔

(ڈیوڈ ڈی ہےیا(اسپین

رواں سیزن ڈیوڈ ڈی ہےیا نے مانچسٹر یونائیٹڈ کے گول پوسٹ کا زبردست دفاع کیا۔

مانچسٹر یونائیٹڈ کی بےجان ٹیم میں اسپینش گول کیپر کی   موجودگی واضح فرق تھی۔

ستائیس سالہ گول کیپر نے پریمیئر لیگ سیزن کے 37میچز میں 86فیصد کےتناسب سے گول روکے اور پریمیئر لیگ  گولڈن گلو کا ایوارڈ جیتا۔

ہسپانوی گول کیپر اب ورلڈ کپ 2018 کی جانب دیکھ رہے ہیں  جہاں ان کی ٹیم نے انہیں پہلی ترجیح کے طور پر چنا ہے۔

ڈی ہےیا نے 27بین الاقوامی میچ کھیلے ہیں جن میں انہوں نے 14 کلین شیٹس حاصل کی ہیں۔

(مارک آندرے ٹرشٹیگن (جرمنی

بارسلوناکی  کارکردگی  اس سیزن تباہ کن رہی جس میں انہوں نے لالیگا ٹائٹل اور کوپا ڈیل رے اپنے نام کیا۔

اگرچہ ان سب کامیابیوں میں لائنل میسی کا نام توجہ کا مرکز رہا لیکن ٹر شٹیگن وہ واحد شخص تھا جس نے ان فتوحات کو یقینی بنایا۔

جرمن گول کیپر بت اس سیزن میں 48 میچ کھیلے  جن میں 24 میں کلین شیٹ حاصل کی اور 39بار گول روکنے میں ناکام ہوئے۔ لالیگا میں ان کا گول روکنے کا تناسب 77.4فیصد تھا۔

چھبیس سالہ گول کیپر پُرامید ہیں اس ورلڈ کپ میں وہ مینیول نیور کی انجری کے سبب جرمنی  کی جانب سے کھیل سکیں گے۔

(جان اوبلک (سولوینیا

ایٹلیٹکو میڈرڈ نے 2014میں جان اوبلک کو ایک کروڑ 60لاکھ یوروز میں خرید کر لالیگا کی تاریخ کا مہنگا ترین گول کیپر بنایا تھا۔

سولوینین  گول کیپر  کے اوپر تھیبو کورٹوئس کا خلاء پر کرنے کی زمہ داری تھی۔

اس سیزن اوبلک نے 49میچز میں 29کلین شیٹس حاصل کیں اور صرف 28بار گول روکنے میں ناکام ہوئے۔ یہ اعداد ان کی زبردست  گول کیپنگ کی صلاحیت کے بارے میں بتاتے ہیں۔

ان کے زبردست دفاع کے بدولت ایٹلیٹیکو میڈرڈ نے تیسری بار یورپا لیگ ٹائٹل اپنے نام کیا اور لالیگا میں دوسری پوزیشن پر سیزن تمام کیا۔

(ایلیسن بیکر (برازیل

ایس سی انٹرنیشنل سے 80لاکھ یوروز میں خریدے جانے والے ایلیسن  اے ایس روما کیلئے ایک نعمت ہے۔

برازیلی گول کیپر نے کلب میں اپنا پہلا سیزن وئیجخ شٹنزےکے بیک اپ کے طور پر کھیلا۔جس میں انہوں نے صرف 15میچز میں شرکت کی۔

تاہم، شٹنزے  کےجانے کے بعد ایلیسن اس سیزن میں  روما کی پہلی ترجیح بن گئے اور اپنی زبردست پرفارمنس سے شناخت بنائی۔

یورپین چیمپئنز لیگ 18-2017میں بارسلونا کو شکست دینے میں ان کا روما کی جانب سے بڑا کرداراداکیا تھا۔

پچیس سالہ گول کیپر نے اس سیزن میں 49میچز میں 80فیصد تناسب کے ساتھ 22کلین شیٹس حاصل کیں۔

برازیلی گول کیپر کو ورلڈ کپ2018 کیلئے پہلی ترجیح کے طور پر سیلکٹ کیا گیا ہے۔

(مینیول نیور (جرمنی

مینیول نیور بے شک اس فہرست میں سب سے اوپر ہوسکتے ہیں ہیں لیکن ان  کی انجری نے ان کے متعلق کئی خدشات پیدا کردیئے ہیں۔

جرمنی کے گول کیپر نے گزشتہ سیزن میں چند ہی میچ کھیلے کیوں کہ سیزن کے درمیان ستمبر میں پیر ٹوٹ گیا تھا جس کی وجہ سے انہیں سیزن کے باقی میچ چھوڑنے پڑ گئے۔

نیور کو ان کے زبردست ریفلیکسز، شاٹ روکنے کی صلاحیت اور بہترین فوٹ ورک کی وجہ سے جانا جاتا ہے۔

بتیس سالہ گول کیپر 2014کے ورلڈ کی فاتح  جرمن ٹیم کا حصہ بھی تھے اور انہوں نے گولڈن گلو کا ایوارڈ بھی جیتا تھا۔

Sports Keeda بشکریہ

loading...
loading...