فٹبال ورلڈ کپ کی گیند”ٹیلسٹار18″پر گول کیپرز کی تنقیدکیوں؟

روس میں ہونیوالے فیفا ورلڈ کپ 2018 کی گیند ٹیلسٹار18 پاکستان میں بنائی گئی ہے

روس میں ہونیوالے فیفا ورلڈ کپ 2018 کی گیند ٹیلسٹار18 پاکستان میں بنائی گئی ہے

سال 1970سے فٹبال ورلڈ کپ کی گیندیں ایڈیڈاس کمپنی ڈیزائن کررہی ہے اور ہر ورلڈ کپ میں  گیند کےمتعلق کئی شکایات سامنے آئیں۔

اس ورلڈ کپ میں استعمال ہونے والی گیند ٹیلسٹار 18پر بھی گول کیپرز کی جانب سے تنقید کی جارہی کہ گیند بے ہنگم  ہے اور اِسے گرپ کرنا مشکل ہے۔واضح رہے اس بار بھی ورلڈ کپ میں استعمال ہونے والی  گیندیں   پاکستان میں  بنائی گئی ہیں۔

لیکن سائنسدانوں  کا کہنا ہے کہ یہ گیند 2010میں جنوبی افریقا میں ہونے والےورلڈ کپ کی بدنام گیند جابولانی سے کہیں زیادہ متوازن ہے۔

ٹیلسٹار18 ایڈیڈاس کی سب سے پہلی ورلڈ کپ گیند”ٹیلسٹار” کی یاد گار ہے جو میکسیکو میں ہونے والے 1970کے فٹبال ورلڈکپ میں استعمال کی گئی تھی۔

ٹیلسٹار پہلی بلیک اینڈ وائٹ گیند تھی جو ورلڈ کپ کیلئے بنائی گئی تھی۔اُس بال کو ایسا اس لیے بنایا گیا تھاتاکہ مونوکرومک (بلیک اینڈ وائٹ) ٹی وی اسکرینز پر واضح دِکھ سکے۔ اُس بال کو مخمس(پانچ کونوں والے) اور مسدس(چھ کونوں والے) ٹکڑوں سے جوڑ کربنایا گیا تھا۔

اس بار  استعمال ہونے والی گیند میں سفید، کالا اور سرمئی رنگ ہے جس پر سنہرے حروف کندہ ہیں۔

ورجینیا کی یونیورسٹی آف لنچ برگ  کے طبعیات کے پروفیسر ایرک گوف ٹیلسٹار پر کیے جانے والے تجربوں کی ٹیم کا حصہ تھے۔

محققین کی ٹیم کو معلوم ہوا کہ ٹیلسٹار18، برازوکا جو فیفا ورلڈ کپ 2014برازیل میں استعمال ہوئی، کے مقابلے میں ہوا میں زیادہ مزاحمت کاسامنا کرتی ہے۔

گوف کا کہنا تھا کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ جب اِس کو 90کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے زور دار کِک ماری جائے گی تو برازوکا کے مقابلے میں یہ آٹھ سے 10فیصد کم فاصلہ طے کرےگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ چیز ان اسٹرائیکر زکیلئے جو زیادہ فاصلے سے کِک مریں گےبری ہوگی ۔لہٰذا انہیں گیند کو بہت زور سے کِک مارنی ہوگی۔

لیکن ممکنہ طور پر یہ گول کیپرز کیلئے خوشخبری ہےکیوں کہ زوردار کِک 2014کی برازوکا کے مقابلے میں کم رفتار سے ان تک پہنچے گی۔

برازوکا کی طرح ٹیلسٹار18 بھی چھ ٹکڑوں سے بنی ہے۔ لیکن ٹیلسٹار18 کے ٹکڑوں کی ساخت مختلف ہے اور سلائی جس نے ان ٹکڑوں کو جوڑا ہے وہ برازوکا کے مقابلے میں 30فیصد زیادہ لمبی ہے۔اس کی سلائی قریب قریب ہے اور زیادہ گہری نہیں ہے۔

جاپان کی سُکوبا یونیورسٹی کے سُنگ چین ہونگ  کے مطابق یہ گیند فری کِک یا کارنر کِک یا درمیانی رینج کے طاقتور شاٹ میں مؤثر  ہوسکتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان کا  نہیں خیال کہ جابولانی کی طرح اس میں زیادہ کوئی بے ہنگم حرکات ہوں گی۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان کا نہیں خیال اس میں گول کیپر کا کوئی نقصان ہے۔

Times Live بشکریہ

loading...
loading...