عبدالرزاق اور گلین میک گرا کا تاریخی ٹاکرا

razzak

پاکستان کے سابق مایہ ناز آل راؤنڈر عبدالرزاق کا شمار دنیا کے بہترین آل راؤنڈرز میں ہوتا ہے اور وہ کسی تعارف کے محتاج نہیں، انہوں نے اپنی شاندار آل راؤنڈ کارکردگی سے پاکستانی ٹیم کو کئی میچوں میں فتحیاب کروایا ہے۔

جنوبی افریقہ کے خلاف 2010 میں انہوں نے اپنے کیریئر کی سب سے بہترین اننگز کھیلی۔ لیکن آج ہم آپ کو ان کے کیریئر کے ایک دلچسپ واقعے کے بارے میں بتانے جارہے ہیں۔

سنہ 2000 میں پاکستان، بھارت اور آسٹریلیا کے مابین آسٹریلیا کے ہی میدانوں میں ٹرائی سیریز کھیلی گئی۔ اس سیریز کے چھٹے میچ میں آسٹریلیا نے پاکستان کے خلاف پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 287 رنز کا ہدف دیا۔ جس کے جواب میں پاکستان کا آغاز بہتر رہا۔

باسٹھ رنز کے مجموعے پر دونوں اوپنرز پویلین لوٹے تو عبدالرزاق اور انضمام الحق نے بیٹنگ کی کمان سنبھالی۔ اسی دوران عبدالرزاق نے اس وقت خوف کی علامت سمجھے جانے والے دائیں ہاتھ کے گیند باز گلین میک گرا کو مسلسل 5 گیندوں پر 5 چوکے جڑ ڈالے۔

میک گرا کے چہرے سے غصہ عیاں تھا اور وہ شدید غصے کی حالت میں اوور کی آخری گیند کرنے کو تیار تھے۔ انہوں نے دوڑتے ہوئے بولنگ مارک پر پہنچ کر گیند کرائی تو یہ گزشتہ 5 گیندوں کی بدولت نسبتاً بہتر رہی۔ عبدالرزاق نے گیند کو عزت دیتے ہوئے سیدھے بلے سے واپس گلین میک گرا کی جانب کھیل دیا۔

جب گلین میک گرا نے گیند کو واپس اپنی جانب آتے دیکھا تو شدید غصے کی حالت میں گیند کو اٹھایا اور اسٹرائیکر اینڈ پر عبدالرزاق کو ڈرانے اور وکٹیں اڑانے کی کوشش کی۔ لیکن اس سے قبل ہی عبدالرزاق صورتحال کو بھانپ گئے تھے اور گیند کو کھیلتے ہی وکٹ سے پیچھے کی جانب بھاگنا شروع ہوگئے۔

یہ لمحہ میچ کی سنسنی میں ایک ہلکا پھلکا سا مزاق لے آیا۔ میچ تو پاکستان ہار گیا مگر ہمیں یقین ہے گلین میک گرا آج بھی ان 5 گیندوں پر مسلسل 5 چوکوں کو نہیں بھولے ہوں گے۔

ویڈیو دیکھیں۔۔۔

loading...
loading...