دہشگردی سے متعلق آن لائن مواد پر گوگل بھی میدان میں

latest

گوگل نے دہشت گردی سے متعلق آن لائن مواد کیخلاف مزید اقدامات کرنے کا فیصلہ کرلیا اور دیگر ٹیکنالوجی کمپنیوں کو زور دیا ہے کہ وہ بھی اس حوالے سے معاونت کریں ۔

گوگل کی جانب سے دہشت گردی سے متعلق مواد ہٹانے کیلئے دیگر تکنیکی کمپنیوں سے الحاق کے باوجود اسکے حکام نے زور دیا کہ دیگر کمپنیوں  کو دہشت گردی سے متعلق آن لائن مواد کی روک تھام کیلئے بھی الحاق کرنے چاہیئے اور اس حوالے سے اقدامات کرنے چاہیئے ۔

جون دوہزار سترہ میں فیس بک، مائیکروسافٹ، ٹوئیٹر اور یوٹیوب کے اعلیٰ حکام کی جانب سے اس حوالے سے جی آئی ایف سی ٹی کے نام سے ایک فورم تشکیل دیا گیا تھا۔

ایک بلاگ میں جی آئی ایف سی ٹی کے سینئر صدر کینٹ والکر نے اس حوالے سے ہم آہنگی موجود ہونے کا اعتراف کیا اور کہا اس حوالے سے ٹیکنالوجی پر کام کرنے کیلئے ہمیں نئی راہیں تلاش کرنی چاہیئے تاکہ دہشت گردی سے متعلق آن لائن مواد کو ہٹایا جاسکے۔

کینٹ والکر نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ کے دہشت گری سے متعلق ڈائریکٹوریٹ اور ٹیک اگینسٹ ٹریرزم پروگرام کے ابھی تک سو سے زائد کمپنیوں کے ساتھ اس حوالے سے کام کیا جاچکا ہے۔

گوگل حکام کے مطابق ابھی بھی دنیا بھر میں موجود دہشت گردی سے متعلق مواد کیخلاف مزید کام کرنے کیلئے آٹھ تھینک ٹینکوں کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں  کہ دہشت گرد نیٹ ورک آن لائن کس طرح کام کرتے ہیں ۔ مواد کی ماڈریشن،  اور آن لائن مواد کے آف لائن اثرات کیا پڑتے ہیں ۔

کہا جارہا ہے کہ یہ نیٹ ورک آئندہ چھ ماہ میں دہشت گردی سے متعلق مواد سے نمٹنے کیلئے اپنی ریسرچ کے ورکنگ پیپر جاری کرے گا۔

Source: Zee News

loading...
loading...