آدھا چہرہ گنوا دینے والے شخص کا کامیاب فیس ٹرانسپلانٹ

naya

شکار کے دوران پیش آنے والے ایک حادثے میں اپنا آدھا چہرہ گنوادینے والے شخص کا کامیاب فیس ٹرانسپلاٹ کر دیاگیا۔

کینیڈا کے شہر گیٹینو سے تعلق رکھنے والے مورِس ڈیجارڈن کو جبڑوں، دانت، ہونٹ، ناک، اور چہرے کے پٹھوں کی ضرورت تھی جو 30 گھنٹوں کے طویل اور پیچیدہ آپریشن کے بعد ان چہرے میں نصب کردیے گئے۔

یہ آپریشن 100 افراد پر مشتمل میڈیکل اسٹاف کی ٹیم نے گزشتہ مئی میں کیا تھا اور متاثر شخص اب اپنے نئے چہرے کے ساتھ کھا سکتا ہے، بول سکتا ہے، سانس لے سکتا ہے اور یہاں تک کہ سونگھ بھی سکتا ہے۔

ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ یہ آپریشن مورِس کی نارمل زندگی بحال کرنے کیلئے آخری موقع تھا۔ مورِس نے حادثے کے بعد پچھلے سات سال نہایت کرب میں گزارے ہیں۔

جس سرجن نے یہ ٹرانسپلانٹ انجام دیا ہے وہ دولتِ مشترکہ کے پہلے ڈاکٹر بن گئے ہیں جنہوں نے انتہائی نایاب آپریشن کیا ہے۔ دنیا میں سال 2005سے صرف 40 ہی چہرے کے ٹرانسپلانٹ ہوئے ہیں۔

اس ٹرانسپلانٹ کے بعد مورِس فیص ٹرانسپلانٹ کرانے والے دنیا کے سب سے معمر شخص بن گئے ہیں۔

Daily mail بشکریہ 

loading...
loading...