انتہائی مہلک وائرس پاکستان کی دہلیز تک پہنچ گیا

-File Photo

-File Photo

بزنس انسائیڈر کی رپورٹ کے مطابق  مخصوص مچھر کے کاٹنے سے پھیلنے والا مہلک ترین زِکا وائرس بھارت تک پہنچ گیا ہے۔ یہ پاکستان کیلئے انتہائی تشویش ناک خبر ہے، کیونکہ بھارت پاکستان کا ہمسایہ ملک ہے اور وہاں پھیلنے والی بیماری کو پاکستان پہنچتے دیر نہیں لگتی۔

15 مئی کو بھارت وزارت صحت نے ریاست گجرات میں پہلی بار 3 افراد میں زِکا وائرس کی تشخیص ہونے کی تصدیق کی۔

رپورٹ کے مطابق  گزشتہ سال فروری سے نومبر تک دو افراد اور رواں برس  جنوری میں تیسرے شخص کے زِکا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے بھارت میں زِکا کی تصدیق پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ‘ مستقبل میں یہ مرض بھارت میں مزید پھیل سکتا ہے، لہٰذا بھارتی حکومت کو اس کی نگرزنی کیلئے کوششیں تیز کرنی ہوں گی۔’

تفصیلات کے مطابق زِکا وائرس پیدائش سے قبل دوران حمل بچے پر انتہائی خطرناک انداز میں اثر انداز ہوتا ہے، یہ بچے کی جسمانی نشونما روک دیتا ہے، بالخصوص متاثرہ بچے کا سر چھوٹا رہ جاتا ہےاور دماغ و عصبی نظام شدید متاثر ہوتا ہے۔ یہ وائرس بھی ڈینگی کی طرح ایک خاص قسم کے مچھر کے ذریعے پھیلتا ہے۔

Sophia, who is two weeks old and was born with microcephaly, sleeps before her physical therapy session at the Pedro I hospital in Campina Grande, Paraiba state, Brazil, Friday, Feb. 12, 2016. The Zika virus, spread by the Aedes aegypti mosquito, is suspected to be linked with occurrences of microcephaly in new born babies, but no link has been proven yet. (AP Photo/Felipe Dana)

 AP Photo/Felipe Dana

مچھر کی یہ قسم رات کے ساتھ ساتھ دن کے وقت بھی لوگوں کو کاٹتی ہے۔

-WikiPedia

-WikiPedia

بشکریہ بزنس انسائیڈر

loading...
loading...