ڈرونز کا شکاری جدید ڈرون

Untitled-2

ڈرون ہنٹر کوئی عام ڈرون نہیں ہے۔ اپنے نام کی ہی طرح یہ  دوسرے ڈرونز کا شکار کرتا ہے اور فضاء میں ہیں  انہیں پکڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

یہ ایک مکمل اور خودمختار فضائی دفاع کا طریقہ کار ہے۔ اس کے ذریعہ آوارہ ڈرونز کو خصوصی طور پر نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔

اس میں لگے رڈار کی مدد سے ڈرون ہنٹر خود ہی بے مقصد اڑنے والے ڈرونز کو پہچاننا سیکھ سکتا ہے۔ ڈرون ہنٹر ایسے ڈرونز کو جالی میں قید کر کے پکڑتا ہے جو بنا اجازت اڑ رہے ہوں۔

اس طرح وہ خود ہی زمین پر اترنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔

اس ڈرون ہنٹر کو بنانے  کا مقصد خطرے کو صحیح فاصلے پر ہی محفوظ مقامات تک پہنچنے سے روکنا ہے۔ یہ دوسرے ڈرونز کو پہچاننے،نگرانی کرنے اور پکڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

ویڈیو میں اس کی کارکردگی دیکھی جا سکتی ہے۔

اس کے کام کرنے کا طریقہ بہت سیدھا سادہ ہے۔ جب بھی کوئی ڈرون رڈار سسٹم میں ممنوعہ جگہ پر اڑتا ہوا دیکھا جاتا ہے، تو یہ سسٹم ڈرون ہنٹر کو ایک پیغام کی صورت میں اس کے بارے میں آگاہ کر دیتا ہے۔ پھر جو بھی قانون نافذ کرنے والا اہلکار موجود ہوتا ہے وہ ڈرون ہنٹر کو خطرے کے مقام پر تعینات کر دیتا ہے۔

بغیر کسی پائیلٹ یا کنٹرول کے یہ ڈرون نشانے تک پہنچ جاتا ہے۔ عمومی طور پر یہ خطرے کو ممنوعہ جگہ سے ایک یا دو میٹر کے فاصلے پر ہی نشانہ بنا لیتا ہے۔ اور پیراشوٹ کے ذریعہ محفوظ طریقے سے اسے نیچے لے آتا ہے۔

ڈرون ہنٹر کی جالی پھینکنے والی گن اسی میٹر فی گھنٹہ  کی رفتار سے جالی پھینکتی ہے۔ اور اس سے پچیس فٹ دور پائے جانے والے خطرے کو نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔ اسے قید خانوں اور سٹیڈیئم کے اطراف میں بھی حفاظت کے لیئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

بمباری کے مقصد سے یا کسی بھی قسم کی غیر قانونی نگرانی کے مقصد سے بھیجے گئے ڈرون کو روکنے کے لیئے ڈروں ہنٹر کا استعمال کیا جاسکتا ہے۔ یعنی کسی بھی کھلی جگہ کی حفاظت میں ڈرون ہنٹر کارآمد ہے۔ امریکی حکومت اور فوج بھی اسے استعمال کرتی ہے۔

ڈرون ہنٹر فارٹم ٹیکنالوجیز نے بنایا تھا۔ اس کمپنی کا مقصد فضائی دفاع اور حفاظت ہے۔

loading...
loading...