فیس بک کا انوکھا استعمال

File Photo

File Photo

فیس بک اکاونٹ اور ٹیلی فون ریکارڈ کا استعمال وبا کو پھیلنے سے روکنے کیلئے بھی کیا جاسکے گا۔ ماہرین نے جرنل آف دا رائل سوسائٹی انٹرفیس میں کہا ہے اگر کوئی وبا پھیلتی ہے اور دنیا کو اس بیماری کی ویکسین کی قلت کا سامنا ہے تو مرض میں مبتلا مرکزی افراد کو ویکسین کی فراہمی سے جراثیم کے پھیلنے کو روکا جاسکے گا۔

ریسرچ میں پانچ سو سے زائد طالبعلموں کے ڈیجیٹل اور طبعی تعلقات کا جائزہ لیا گیا اور یہ نتیجہ اخذ کیا گیا کہ ڈیجیٹل نیٹ ورک میں مرکزی حیثیت رکھنے والے لوگ یقینی طور پر حقیقی زندگی میں مرکز ہی ہونگے۔

ریسرچ میں مزید کہا گیا ہے کہ اگر بیماری میں مبتلا افراد اپنے سوشل نیٹ ورک میں مرکز ہونگے اور غالب امکان ہے کہ یہی افراد ایک گروپ سے دوسرے گروپ تک جراثیم کے پھیلانے کا سبب بنے۔

ریسرچ میں شامل ڈنمارک کی یونیورسٹی کے ایک پروفیسر کا کہنا ہے کہ اگر فیس بک یا پھر فون پر کئی دوست ہونے کے سبب آپ اپنے دوستوں میں مرکز کی حیثیت رکھتے ہیں جو آپکو  مختلف فرقوں کے درمیان رابطے کار بناتی ہے۔ تو اس بات کا غالب امکان ہے کہ آپ کسی بھی وبا پھیلنے کی صورت میں متاثرین کے لئے رابطہ پل کا کام سرانجام دے سکیں۔

ریسرچ میں مزید کہا گیا ہے کہ آن لائن کونٹیکٹس کوسمجھنے کے بعد متاثرہ کمیونٹی جس کو وسائل کی کمی کا سامنا ہے ان کے مرکزی رابطہ ممبران کو تلاش کرکے وبا کے انسداد کیلئے اقدامات کیا جاسکیں گے۔

ریسرچ میں وبا کیخلاف ویکسین کے اس طرز پر استعمال کو بھی پر اثر قرار دیا گیا ہے۔

Source: rappler.com