خلائی مخلوق کس جسامت کی حامل ہو سکتی ہے؟

-Huffington post

-Huffington post

کائنات میں کئی پراسرار راز چھپے ہوئے ہیں جن سے پردہ اٹھنا ناممکن ہے، خلائی مخلوق (ایلین) ہیں یا نہیں؟ یہ تو کوئی وسوق سے نہیں کہ سکتا۔ لیکن اس حوالے سے کئی ہالی وڈ فلمیں بنی ہیں اور ان میں مختلف اشکال کے ایلین دکھائے گئے۔ تاہم اصل خلائی مخلوق کا وجود کیاسا ہوگا؟ حقیقت میں وہ کس طرز کے خدوخال کے مالک ہیں؟ اس بارے میں کوئی حتمی نظریہ موجود نہیں ہے۔

 حال ہی میں فرگس سمپسن نامی ایک سائنسدان نے یہ انکشاف کیا ہے کہ ایلین یا دیگر سیاروں کی مخلوقات کا اگر وجود ہوا تو وہ تقریباً ریچھ کی جسامت کے برابر ہوں گے اور ان کا وزن لگ بھگ 300 کلو گرام ہو گا۔

یونیورسٹی آف بارسلونا کے فرگس سمپسن نے اپنے تجزیے میں بتایا کہ ممکنہ طور پر کسی بھی آباد سیارے پر ایلینز کی تعداد تقریباً پانچ کروڑ ہوسکتی ہے۔

لائیو سائنس کے مطابق ان کی یہ تحقیق بےايس کے اصول پر مبنی ہے، یہ دراصل ریاضی کی ایک شاخ ہے جسے بےايسين اسٹیٹس اسٹکس کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

فرگس سمپسن یونیورسٹی آف بارسلونا کے انسٹیٹیوٹ آف کاسموس سائنس پر پوسٹ ڈاکٹورل ریسرچر ہیں، انہوں نے اپنی تحقیق میں نادیدہ سیاروں میں مخلوقات کی موجودگی کا اشارہ دیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ ان سیاروں میں بسنے والے ایلینز کی جسمانی ساخت اس سے یکسر مختلف ہوسکتی ہے، جس کا پہلے تصور کیا گیا تھا۔ انہوں نے اپنی تحقیق میں لکھا ہے کہ توقع ہے کہ زمین کے جیسے سیارے کی دریافت سے نظامِ شمسی سے باہر زندگی کی دریافت کا بہت بڑا موقع فراہم ہوگا۔

بشکریہ لائیوسائنس

loading...
loading...