جی 7ملاقات:پلاسٹک فضلاسےنمٹنے کیلئے کاروباری شخصیات کو شامل کرنے پرغور

samandara

کینیڈا کی وزیر ماحولیات کیتھرین مک کینا کہتی ہیں  کہ وہ چاہتی ہیں کہ کاروباری شخصیات آئندہ مہینوں میں ہیلی فیکس میں ان کی اور ان کے جی7ممالک کے ہم منصبوں درمیان سمندر میں جانے والے پلاسٹک کے فضلا کو کم کرنے کے متعلق  ہونے والی ملاقات  میں شامل ہوں۔

منگل کو نیوز کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے  کیتھرین نے کہا کہ کینیڈین شہری ہر سال 150ارب ڈالرز کی پلاسٹک  پھینکتے ہیں، جس کا بڑا حصہ سمندر میں پہنچتا ہے۔

کینیڈین وزیر نے کہا کہ وہ قومی سطح پر پلاسٹک کے مسئلے سے نمٹنے کیلئے حکمتِ عملی بنانے کیلئے صوبوں، علاقوں اور بلدیاتی سطح پر کام کرنا چاہتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ستمبر کے آخر میں ہونے والی ملاقات میں پلاسٹک بنانے والوں کو بھی حصہ لینا چاہیئے۔ جس میں اٹلی، فرانس، برطانیہ، یورپین یونین، جرمنی، امریکا، اور جاپان کے ہم منصب شامل ہیں۔

گزشتہ برس چارلیوئی میں ہونے والی جی7میٹنگ میں امریکا اور جاپان نے نام نہاد  اوشین پلاسٹک چارٹر پر دستخط نہیں کیے تھے۔

ماہرین کے اندازوں کے مطابق 2050تک سمندر میں پلاسٹک کا حجم مچھلیوں سے کہیں زیادہ بڑھ سکتا ہے۔

The Globe and Mail بشکریہ

loading...
loading...