آسمان کے تیرہ فیصد حصے پر گیس کا قبضہ

File Photo

File Photo

گیس کے بادلوں نے تیرہ فیصد آسمان پر قبضہ کرلیا۔ کائنات کے گرد گیس سینکڑوں کلومیٹر رفتار سے سفر کررہی ہے اور اس نے تیرہ فیصد آسمان کو ڈھانپ لیا ہے۔

حالیہ جاری کردہ نقشے میں آسمان اور اسکے گرد نیوٹل ہائیڈروجن گیس کو کہکشاں سے موازنے میں مختلف رفتار سے سفر کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے۔ یونیورسٹی آف ویسٹرن آسٹریلیا کے مطابق یہ گیس کے بادل ہماری جانب یا پھر ہمارے سے پرے سینکڑوں کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرر ہے ہیں۔

بادلوں کے اس نقشے کو سب سے زیادہ واضح اور حساس قرار دیا گیا ہے  یہ نقشہ آسمان کی تصویر کھینچ کر اور اس میں گیس کو واضح کرتے ہوئے بنایا گیا ہے تاکہ آسمان پر گیس کی مختلف رفتار کو دکھایا جاسکے۔

یونیورسٹی کی جانب سے اس طرز کے بادلوں اور ان کا ڈھانچہ واضح دکھانے کو مختلف تجربہ قرار دیا گیا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس طرز کی دریافت ماضی میں پہلے نہیں کی گئی اور اس سے گیس کے بادلوں کے نقطہ پیدائش سے متعلق نئے اشارے مل سکتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مختصر اور طویل میگلانک بادلوں کی نقطہ پیدائش سے متعلق کچھ ضرور معلوم ہے لیکن اب بھی دیگر گیس کے بادلوں سے متعلق معاملات پوشیدہ یا نامعلوم ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا یہ گیس وہ ہوسکتی ہے جو کہ کہکشاں سے باہر نکل رہی ہو یا پھر اس کے اندر جارہی ہو۔

واضح رہے کہ یہ نقشہ ماہانہ میگزین رائل آسٹرونومیکل سوسائٹی میں شائع کیا گیا ہے۔

Courtesy: zeenews.com