خیبرپختونخوا کے مختلف اضلاع میں بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچا دی

pani

خیبرپختونخوا کے مختلف اضلاع میں بارشوں اور سیلاب نے تباہی مچا دی۔ لینڈ سلائیڈنگ اور چھتیں گرنے سے خاتون اور بچے سمیت 8 افراد جاں بحق جبکہ 20 افراد ذخمی ہوگئے۔ چترال میں چائنیز کمیپ میں پانی داخل ہوگیا۔مردان کے کلپانی نالہ بھی سیلاب کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

پی ڈی ایم اے ذرائع کے مطابق خیبرپختونخوا کے مختلف اضلاع میں سیلابی ریلوں، لینڈ سلائیڈنگ اور بارشوں کا سلسلہ جاری ہے۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق خیبرپختونخوا کے اضلاع باجوڑ، ملاکنڈ، سوات، طورغر اور لوئر دیر میں لینڈ سلائیڈنگ، گھر کی چھت گرنے اور سیلابی ریلوں سے خاتون اور بچے سمیت 8 افراد جاں بحق ہوگئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں طورغر میں تعینات پولیس کانسٹیبل فضل جاں بحق ہوگیا جبکہ لوئر دیر میں ایاز نامی نوجوان  سیلابی ریلے میں بہہ گیا، جس کی لاش چکدرہ کے مقام سے نکال لی گئی۔

دوسری طرف زخمی ہونے والوں کو بھی علاج معالجے کی سہولت فراہم کردی گئی۔  چترال کے علاقے دروش میں سیلابی نالوں میں تغیانی کی وجہ سے لاوی چائنیز کیمپ میں پانی داخل ہوگیا جس کی وجہ سے کیمپ میں موجود مشینری کو نقصان پہنچا ۔تاہم کوئی جانی نقصان کی اطلاع نہیں۔

پی ڈی ایم اےکےمطابق مردان کے کلپانی نالہ بھی سیلاب کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا، تغیانی سےقریبی علاقوں میں پانی داخل ہوگیا اور زرعی اراضی کو نقصان پہنچا۔ طورغر اور چترال سمیت کئی علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ سےمتاثر ہونے والی سڑکوں سے ملبہ ہٹانے کے لیے مشینری جاعہ وقوعہ پر پہنچا دی گئی تاکہ سڑکوں کو جلدی کلیئر جاسکے۔

وزیراعلیٰ کے احکامات پر پی ڈی ایم اے نے متعلقہ اضلاع کی ضلعی انتظامیہ کو بارشوں اور سیلاب سے متاثرہ خاندانوں کو فوری امداد کی ہدایت جاری کر دی۔

loading...
loading...