آصف زرداری کی درخواست ضمانت مسترد ہونے کا تفصیلی فیصلہ جاری

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد :اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق صدر آصف زرداری کی درخواست ضمانت مسترد ہونے کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامرفاروق اورجسٹس محسن اخترکیانی نے سابق صدر آصف زرداری کی درخواست ضمانت مسترد ہونے کا تفصیلی فیصلہ جاری کیا،7صفحات پر مشتمل فیصلے میں سپریم کورٹ کےفیصلوں کا بھی حوالہ دیا گیا ۔

فیصلے میں کہا گیا کہ سپریم کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے میں نیب کیسزمیں ضمانت کا معیارمقررکیا جس کا اطلاق ضمانت قبل ازگرفتاری کیس میں بھی ہوتا ہے ۔

فیصلے میں آصف زرداری کی درخواست ضمانت مسترد کرنے کی وجوہات بتاتے ہوئے کہا گیا کہ گرفتاری میں غیرمعمولی حالات یا بدنیتی ہوتوعبوری ضمانت دی جاسکتی ہے ۔

فیصلے میں مزید کہا گیا کہ نیب مزید تفتیش کیلئے آصف زرداری کو گرفتارکرنا چاہتی ہے جس میں کوئی بدنیتی نہیں ، اس لئے درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری کے معیارپر پوری نہیں اترتی جس وجہ سے مسترد کی جاتی ہے ۔

 فیصلے میں چیئرمین نیب کے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کے حوالے سے اختیارکے سوال پر کہا گیاکہ اختیارات کا سوال ہی نہیں بنتا ،چیئرمین نیب ریفرنس فائل ہونے کے بعد بھی وارنٹ گرفتاری جاری کرسکتے ہیں ۔

واضح رہےاسلام آباد ہائیکورٹ نے 10 جون کو آصف زرداری کی ضمانت مسترد کرنے کا مختصر فیصلہ سنایا تھا ،درخواست ضمانت مسترد کرنے کی وجوہات پر مبنی تفصیلی فیصلہ آج جاری کیا گیا ہے۔

loading...
loading...