اسلام آبادہائیکورٹ نےنوازشریف کی تمام میڈیکل رپورٹس طلب کرلیں

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:اسلام آباد ہائیکورٹ نے مسلم لیگ (ن)کے قائد نواز شریف کی تمام میڈیکل رپورٹس طلب کرلیں۔

پیر کو اسلام آبادہائیکورٹ کے جسٹس عامرفاروق اورجسٹس محسن اخترکیانی پرمشتمل ڈویژن بینچ نے العزیزیہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی سزا معطلی کی درخواست پرسماعت کی ، اس موقع پرنوازشریف کی جانب سےعدالت میں خواجہ حارث پیش ہوئے،راجہ ظفرالحق، مریم اورنگزیب، عرفان صدیقی ودیگر بھی عدالت میں موجود تھے۔

سماعت کے دوران نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت پر سماعت کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کی فیملی کوان کی صحت سے متعلق تشویش ہے ،پہلے اسے سن لیں۔

عدالت نے میڈیکل بورڈ کی رپورٹ سے متعلق استفسارکیا توخواجہ حارث نے رپورٹس نامکمل ہونے کا مؤقف اپناتےہوئے کہا کہ نوازشریف کی تازہ میڈیکل رپورٹ درخواست کے ساتھ لگائی ہیں تاہم کچھ ٹیسٹ کی رپورٹ نہیں دی گئی۔

جسٹس عامر فاروق نے سوال کیا کہ کیا جیل میں صحت کی سہولیات نہیں مل رہیں؟جس پر خواجہ حارث نے جواب دیا کہ نواز شریف کے میڈیکل ٹیسٹ کی رپورٹس ہمیں نہیں دی گئیں۔

جسٹس عامرفاروق نے استفسار کیا کہ کیاکوئی علاج رپورٹ میں تجویزکیا گیاہے ،جس پرخواجہ حارث نے دونوں میڈیکل بورڈرکی رپورٹس پڑھتےہوئے بتایاکہ میڈیکل بورڈ نے گردے اوردل کے عارضے کے باعث نوازشریف کواسپتال منتقل کرنے کی تجویزدی ہے۔

عالیہ عالیہ نے خواجہ حارث کی استدعا قبول کرتے ہوئے نواز شریف کی تمام میڈیکل رپورٹس طلب کرلیں۔

دوسری جانب عدالت نے نیب اور سپرنٹنڈنٹ کوٹ لکھپت جیل کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے سماعت 6 فروری تک ملتوی کردی۔

loading...
loading...