سپریم کورٹ کا کھوکھر پیلس خالی کرانے کا حکم

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور: سپریم کورٹ نے محکمہ اینٹی کرپشن کو کهوکهر برادران کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے سرکاری اراضی پر تعمیر کهوکهر پیلس خالی کرانے کا حکم دے دیا۔

لاہور رجسٹری میں کھوکھر برادران کے قبضوں کےخلاف ازخود نوٹس پر سماعت ہوئی۔

ڈی جی اینٹی کرپشن نے ملزمان کی جائیدادوں اور کهوکهر پیلس سے متعلق رپورٹ جمع کرائی۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ کھوکھر پیلس میں شامل40کنال سرکاری اراضی پر کھوکھر برادران کا قبضہ ہے۔کهوکهر پیلس مختلف افراد سے زبردستی خریدی ہوئی مشترکہ کهاتے پر تعمیر ہے۔ملزمان نے10افراد میں سے صرف ایک کو ادائیگی کی باقیوں کو بھگادیا۔

انہوں نے آپ کی ریٹائرمنٹ کی تاریخ تک ضمانتیں کرا رکهی ہیں۔ان کا خیال ہے کہ آپ کی ریٹائرمنٹ کے بعد انہیں کوئی نہیں پوچهے گا۔

جس پر چیف جسٹس نے اینٹی کرپشن کو کھوکھر پیلس خالی کرانےاور کھوکھر برادران کے خلاف کارروائی کا حکم دیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ قبضے کا کلچر کهوکهر برادران نے متعارف کروایا۔ان کی مرضی کےخلاف وہاں مکهی بهی پر نہیں مار سکتی۔

چیف جسٹس نے کہا یہ جو آنکهیں جهکائے کهڑے ہیں۔مجهے پتہ ہے انہوں نے بعد میں میرے ساتھ کیا کرنا ہے۔پاکستان میں یہ بدمعاشی نہیں چلنے دوں گا۔ایسے لوگوں نے پاکستان کو تباہ کر دیا ہے۔

عدالت نے کھوکھر پیلس خالی کرانے سے متعلق10دن میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا۔

loading...
loading...