سال 2018: روپے کی بے قدری نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو ہلا کررکھ دیا

فائل فوٹو

فائل فوٹو

کراچی: سال 2018 کے دوران ملکی سیاسی صورتحال، روپے کی بے قدری اور بلند شرح سود نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو ہلا کر رکھ دیا۔ رہی سہی کسر بین الاقوامی حالات نے پوری کردی۔ ایک سال کے دوران 100 انڈیکس 3400پوائنٹس کم ہوگیا۔

اکتیس دسمبر  2017کے ایس ای ہنڈریڈ انڈیکس 40471 پر موجود اور اب 31 دسمبر2018 انڈیکس 37ہزار  پر بند ہوا۔

ایک سال کے دوران 3400 پوائنٹس گھٹ گئے۔

غیریقینی سیاسی صورتحال کے ساتھ معاشی اتار چڑھاؤ نے بھی مارکیٹ کی کارکردگی کو متاثر کیا۔

کرنٹ اکاؤنٹ اور تجارتی خسارہ چیلنج بنے رہے۔ کرنسی ڈی ویلیو ایشن اور انٹریسٹ ریٹ  میں اضافے نے سرمایہ کاروں کی بے چینی بڑھادی۔

بڑے تو  بڑے چھوٹے سرمایہ کار بھی مارکیٹ کی پرفارمنس سے خائف رہے۔

دوہزار اٹھارہ میں مارکیٹ کی پرفارمنس کے بعد سرمایہ کار نئے سال سے پُر امید ہیں۔

loading...
loading...