جام خان شورو کیخلاف 3 مختلف انکوائریوں کی مزید تفصیلات

فائل فوٹو

فائل فوٹو

کراچی:جام خان شوروکےخلاف3مختلف انکوائریوں کا انکشاف ہوا ہے۔

سابق صوبائی وزیربلدیات جام خان شورو کے خلاف نیب انکوائریوں کی مزید تفصیلات سامنے آئی ہیں۔

نیب ذرائع کے مطابق جام خان 62سرکاری پلاٹوں کی غیرقانونی نیلامی میں ملوث ہیں۔ جو کراچی کے علاقےگلستان جوہر میں ہیں۔جام خان شورونےیہ پلاٹس اپنےفرنٹ مین اوشک راہوجوکےنام منتقل کئے۔

ذرائع کے مطابق پلاٹوں کی نیلامی میں سابق ڈی جی کےڈی اےناصرعباس گرفتارہیں۔پلاٹوں کی غیرقانونی نیلامی سےخزانےکو180ملین کانقصان ہوا ہے۔

جام خان شورو پرملیرڈی ایم سی میں رشوت لینےکابھی الزام ہے۔جو رشوت فرنٹ مین کے ذریعے لی گئی ہے۔ڈی ایم سی ملیرکاسابق ایڈمنسٹریٹرعبدالرشیدفرنٹ مین ہے۔

ذرائع کے مطابق محمد انور بھی جام خان شورو کا فرنٹ مین ہے۔دونوں جام خان شوروکیلئےماہانہ رشوت جمع کرتے تھے۔

نیب نے دعوی ٰ کیا ہے کہ جام خان شوروکےفرنٹ مین گرفتارہوچکے ہیں اوراعتراف کرچکےہیں۔

نیب کے مطابق سابق وزیر بلدیات پر262زرعی اراضی ہتھیانے کا بھی الزام ہے۔یہ زرعی زمین ضلع ٹھٹھہ دیہہ کوہستان میں ہے۔

مزید یہ کہ تینوں انکوائریوں میں تفتیش کیلئےباقاعدہ نوٹس بھیج چکےہیں۔

loading...
loading...