کوئی ایسا فیصلہ نہیں دیں گے جس سے تنازع کھڑا ہو،چیف جسٹس

فائل فوٹو

فائل فوٹو

کراچی:چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق کیس میں ریمارکس دیئے کہ کوئی ایسا فیصلہ نہیں دیں گے جس سے تنازع کھڑا ہو۔

ہفتے کو چیف جسٹس آف پاکستان کی سربراہی میں سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق کیس کی سماعت کی۔

دوران سماعت کالا باغ ڈیم بنے گا یا نہیں ،چیف جسٹس ثاقب نثار نے تجاویز مانگ لیں۔

مجیب پیرزادہ ایڈوکیٹ نےدلائل دیتے ہوئے کہا کہ پانی کی قلت پر کسی کو اعتراض نہیں مگر کالا باغ ڈیم کا نام جہاں آتا ہے تنازع کھڑا ہوجاتا ہے،خطرہ محسوس ہوتا ہے تو لوگ بات کرتےہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے آپ کو خطرہ کیوں محسوس ہوتا ہے؟،کل مشرف کو آنے کیلئے کہا تو لوگوں کو خطرہ محسوس ہونے لگا؟مشرف سے کسی کو کیا خطرہ ہے ؟4 بھائی متفق نہیں تو متبادل حل نکالیں
سچ یہ ہے کہ ملک میں قانون بنانے کی صلاحیت ختم ہوچکی ہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ معاملے کےحل کیلئے تجاویز دیں،اگر ضرورت پڑی تو ہم حکم جاری کریں گے،ماہرین کو اکھٹا کریں گے، معاملے کے حل کی کوشش کریں گے،سیمینارز کے ذریعے پہلا قدم اٹھائیں گے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ کراچی اور سندھ سے اس کا آغاز کریں گےکوئی ایسا حکم نہیں دیں گے جہاں تنازع ہو،ہم آنے والی نسل کو اچھا مستقبل دے کرجائیں گے ۔

loading...
loading...