پیر حمید الدین اور رانا ثنا کے درمیان اختلافات ختم کرانے میں شہباز شریف ناکام

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:عقیدہ ختم نبوت کے حوالے سے وزیر قانون رانا ثناء اللہ  اور پیر آف سیال شریف کے درمیان اختلافات ختم کرانے کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی کوششیں ناکام ہوگئی ہیں۔

 رانا ثناء اللہ کے استعفے کے حوالے سے پیر حمید الدین سیالوی کی تشکیل کردہ کمیٹی دو دھڑوں میں تقسیم ہو گئی۔

پیر نظام الدین سیالوی، ریاض حسین شاہ اور مولانا رحمت نے دیگر اراکین کو اعتماد میں لئے بغیر لاہور میں رانا ثناء اللہ سے ملاقات کی۔

 رانا ثناء اللہ نے اپنے بیان میں واضع کیا کہ ختم نبوت کے حوالے سے اپنا عقیدہ کمیٹی کے روبرو پیش کر دیا جسے کمیٹی اراکین نے سراہا۔

 دوسری طرف جانب پیر حمید الدین سیالوی کے بیٹے قاسم سیالوی اور کمیٹی کے کنوینئر شمس الرحمن نے نظام الدین سیالوی گروپ کی رانا ثناء اللہ سے ملاقات کو مسترد کر دیا ہے۔

 سیال شریف کی کمیٹی کا کہنا ہے کہ رانا ثناء اللہ کو چھ رکنی کمیٹی کے سامنے داتا دربار یا بادشاہی مسجد میں پیش ہونا تھا۔ حکومت نے ایک بار پھر پیر حمیدالدین سیالوی سے وعدہ خلافی کی ہے۔

loading...
loading...