پاکستان کڈنی اینڈ لیورانسٹیٹیوٹ: چیف جسٹس نے ادارے کے سربراہ کی سخت سرزنش کردی

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار-فائل فوٹو

چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار-فائل فوٹو

پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ میں مالی بے ضابطگیوں پر چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ادارے کے سربراہ ڈاکٹر سعید اختر کی سخت سرزنش کی ہے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ بارہ بارہ لاکھ روپے پر ڈاکٹر بھرتی کر کے کیسے ملک کی خدمت کی گئی؟ آپ نے قومی خزانے کا20 ارب روپے کہاں لگایا؟ جن کو دکھانے کیلئے آپ وہاں دورے کرواتے رہے۔ اس سے آپ کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔

 چیف جسٹس نے کہا کہ پلس کنسٹرکشن کا ریٹ تین ہزار روپے فی اسکوائر فٹ ہوتا ہے۔ پی کے ایل آئی میں10ہزار سو روپے فی اسکوائر فٹ کنسٹرکشن کروائی گئی۔ یہ کوئی سلطنت نہیں تھی جہاں سلطان جو مرضی حکم دیتے رہیں۔

چیف جسٹس نے ڈاکٹر سعید کے بیرون ملک سفر پر پابندی لگاتے ہوئے 20 ارب روپے کے فنڈز کا فرانزک آڈٹ کرانے کا حکم دے دیا۔

loading...
loading...