واجد ضیا کی جے آئی ٹی رپورٹ کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کی استدعا مسترد

جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیا-فائل فوٹو

جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیا-فائل فوٹو

اسلام آباد:احتساب عدالت اسلام آباد نے لندن ریفرنس میں واجد ضیا کی جانب سے جے آئی ٹی رپورٹ کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنانے کی استدعا مسترد کردی۔
شریف خاندان کے لندن فلیٹ کے مقدمے کی سماعت ہوئی جس میں جے آئی ٹی سربراہ کی درخواست مسترد کر دی گئی۔

 احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نوازشریف فیملی کے لندن فلیٹ والے مقدمے کی سماعت کی جس میں  واجد ضیاء نے جے آئی ٹی کی تمام تر رپورٹ کو مقدمہ ریکارڈ کا حصہ بنانے کی درخواست کی۔

 جج نے ریمارکس میں کہاکہ ساری رپورٹ دے کر کیا واجد ضیاء اپنی جان چھڑانا چاہتے ہیں۔ کارروائی طویل ہونے سے کچھ نہیں ہوگا ۔ کارروائی قانون کے مطابق ہی ہونی چاہیئے۔

نیب کے وکیل نے بھی  مکمل رپورٹ کو رکارڈ کا حصہ بنانے کی حمایت کی تاہم  عدالت  نے فیصلہ کچھ دیر کیلئے محفوظ کرنے کے بعد واجد ضیاء کی درخواست مسترد کردی۔

 وکیل صفائی امجدپرویز اور نیب وکیل سردار مظفر کے درمیان  تلخ کلامی پر جج محمد بشیر برہم ہوگئے سماعت ایک ہفتے کیلئے ملتوی کردی۔

loading...
loading...