نواز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ مسترد کردیا

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:مسلم لیگ (ن)کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے قومی سلامتی کمیٹی کااعلامیہ مسترد کردیا۔

منگل کو احتساب عدالت کے باہرمیڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ افسوس ناک اور تکلیف دہ ہے جسے مسترد کرتا ہوں۔

نوازشریف نے کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ حقائق سے مطابقت نہیں رکھتا، پتا لگناچاہئے کہ ملک کو اس نہج پر کس نےپہنچایا؟،ملک میں دہشتگردی کی بنیاد کس نے رکھی اور ذمہ دار کون ہے؟۔

سابق وزیراعظم نے مطالبہ کیا کہ میرے انٹرویو پر قومی کمیشن بننا چاہیئے، قومی کمیشن دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی کردے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی نے بھی ڈان لیکس کی تصدیق کردی،قومی سلامتی کمیٹی میں بھی یہی باتیں ہوئی تھیں،اس وقت بھی میں نے کہا تھا کہ گھرکوٹھیک کرناچاہیے،اتنا پیارا ملک تھا ہمارا، لیکن اب اسے دیکھ کر تکلیف ہوتی ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ ہم دنیا میں تنہا ہوچکے ہیں، آپ ہی بتا دیں کہ دنیا کا کون سا ملک ہمارے ساتھ ہے؟۔

مسلم لیگ کے قائد مزید نے کہا کہ خواجہ آصف سے پوچھیں جب جب وہ غیر ملکی دوروں پر گئے، بیرون ممالک کے صدوراور وزرائےاعظم نے میری بات کی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روزوزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں نوازشریف کے ممبئی حملوں سے متعلق بیان کو مسترد کردیا گیا تھا۔

loading...
loading...