فیض آباد دھرنے کی نشریات روکنے کیخلاف وفاق اور پیمرا کو نوٹس جاری

فائل فوٹو

فائل فوٹو

لاہور:لاہور ہائیکورٹ نے فیض آباد دھرنے کی نشریات روکنے کیخلاف دائر درخواست پر وفاقی حکومت اور پیمرا کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔
جمعرات کو  لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے سول سوسائٹی کی رکن آمنہ ملک کی درخواست پر سماعت کی۔

درخواستگزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ایک جانب نواز شریف کی توہین آمیز تقاریر عدالتی حکم کے باوجود نشر کی جارہی ہیں اور دوسری طرف فیض آباد دھرنے کو نہ دکھانے کیلئے نجی چینلز کی نشریات کو بندکردیا گیا۔

پیمرا کے سکیشن 5 کے تحت وفاقی حکومت نشریات نہیں روک سکتی،معلومات کی فراہمی پر پابندی قانون کی خلاف ورزی ہے۔

عدالت ذمے داروں  کے خلاف قانونی کارروائی کا حکم دے اور چیئرمین پیمرا سے نشریات روکنے  پر وضاحت طلب کرے۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد وفاقی حکومت اور پیمرا کو نوٹس جاری کردئیے۔