سابق ایم کیو ایم رہنماء سلیم شہزاد انتقال کرگئے

-Twitter.com/NaziaA_Ali

-Twitter.com/NaziaA_Ali

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے بانی رہنماؤں میں سے ایک سلیم شہزاد لندن میں انتقال کر گئے ہیں۔

سلیم شہزاد گردے اور جگر کے سرطان میں مبتلا تھے اور لندن کے اسپتال میں زیر علاج تھے۔ ان کے سوگواران میں 5 بیٹیاں اور ایک بیوہ شامل ہیں۔

چوبیس گھنٹے قبل ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ سلیم شہزاد کی حالت تشویشناک ہے اور ان کے لیے آئندہ 36 گھنٹے اہم ہیں۔

Untitled-1

خیال رہے کہ سلیم شہزاد 6 فروری 2017 کو طویل خودساختہ جلاوطنی ختم کرکے دبئی سے کراچی پہنچے تھے، تاہم انہیں ایئرپورٹ پر گرفتار کرکے اگلے روز جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا تھا۔

بعد ازاں 2 جون 2017 میں کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت اور ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج شرقی نے سلیم شہزاد کے ریلیز آرڈر جاری کردیے تھے۔

 2  دسمبر 2017 کو کراچی کی سٹی کورٹ میں پیشی کے بعد میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے سلیم شہزاد کا کہنا تھا کہ وہ نئی پارٹی کی بنیاد رکھنے جارہے ہیں اور ان کی پارٹی میں نہ چائنا کٹنگ والے ہوں گے، نہ ٹارگٹ کلر اور نہ ہی ڈرائی کلینر۔

سلیم شہزاد نے یہ بھی کہا تھا کہ وہ انتخابات میں اورنگی ٹاؤن سے حصہ لیں گے جبکہ باقی حلقوں سے اپنی پارٹی کے امیدوار کھڑے کریں گے۔

سلیم شہزاد کے خلاف مجموعی طور پر23 مقدمات درج ہیں۔ 10 مقدمات لانڈھی تھانے میں، 4 ناظم آباد ،3 جوہرآباد جبکہ ایک ایک مقدمہ اورنگی، نارتھ ناظم آباد اور مومن آباد تھانے میں درج ہے۔

سلیم شہزاد دہشت گردوں کے علاج معالجے سے متعلق ڈاکٹر عاصم حسین کیس کی تفتیش کے سلسلے میں بھی پولیس کو مطلوب تھے۔

loading...
loading...