توہین عدالت کیس میں دانیال عزیز پر فرد جرم عائد

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے توہین عدالت  کیس میں وفاقی وزیربرائے نجکاری اور مسلم لیگ (ن)کے رہنماء دانیال عزیز پرفرد جرم عائدکر دی  ۔

منگل کو جسٹس عظمت سعید شیخ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے لیگی رہنماء دانیال عزیز کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی،دانیال عزیز عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔

سپریم کورٹ میں جسٹس مشیر عالم نے وفاقی وزیردانیال عزیز کے خلاف فرد جرم پڑھ کر سنائی۔

عدالت عظمیٰ نے مسلم لیگ (ن) کے رہنماء پر فرد جرم عائد کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ دانیال عزیز، عدالت اور ججز کو اسکینڈلائز کرنے کے مرتکب ہوئے ہیں اورانہوں نے انصاف کی راہ روکنے کی کوشش کی۔

عدالت نے مزید ریمارکس دیئے کہ دانیال عزیز نے 8 ستمبر کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ نیب ریفرنس سپریم کورٹ کے نگران جج نے نیب لاہور کو طلب کر کے ریفرنس کیلئے تیار کیا جبکہ 15 دسمبر کو دانیال عزیز نے کہا تھا کہ جہانگیر ترین کو سزا دے کر عمران خان کو بچانا مقصود تھا۔

فرد جرم میں مزید بتایا گیا کہ دانیال عزیز کی جانب سے کہا گیا کہ یہ سب اسکرپٹ کے مطابق کیا گیا، اس کے علاوہ 31 دسمبر کو دانیال عزیز نے کہا تھا کہ جسٹس اعجاز الاحسن کو بتانا ہوگا کہ کیپیٹل ایف زید ای کی بات ان کے کانوں تک کیسے پہنچی اور جے آئی ٹی کو ایف زیڈ ای سے متعلق تحقیقات کا کہا گیا تھا۔

دانیال عزیز نے الزامات تسلیم کرنے سے انکار کردیاتاہم ان کے وکیل  نے فرد جرم پر دستخط کردیئے۔

 جسٹس عظمت سعید نے استفسار کیا کہ کیا آپ نے فرد جرم پڑھ کر دستخط کئے ہیں،وکیل نے جواب دیا جی ہاں۔

عدالت نے ریمارکس دیئے  کہ دانیال عزیز نے عدالتی کام میں مداخلت کی اب باقاعدہ ٹرائل کا آغازجائے گا،جس کے بعد عدالت نے کیس کی آئندہ سماعت پر استغاثہ کے گواہ اور شہادتیں طلب کرلیں۔

سپریم کورٹ نے دانیال عزیز کیس کی سماعت 26 مارچ تک کیلئے ملتوی کردی۔

loading...
loading...