تحریک قصاص کا 17 جنوری کو احتجاجی مظاہرے کا اعلان

Untitled-2

لاہور: شہداء سانحہ ماڈل ٹاؤن کے لواحقین کو انصاف کی فراہمی کے لئے تحریک قصاص کا نقارہ بج گیا۔ سترہ جنوری کو مال روڈ لاہور پر گھمسان کا میدان سجانے کی تیاریاں جاری ہیں۔

تفصیلات کے مطابق آصف علی زرداری اور عمران خان بھی احتجاج میں شرکت کریں گے لیکن طاہرالقادری کے کنٹینر پر ایک ساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں۔ جبکہ حکومت بھی مظاہرین سے نمٹنے کے لئے ایکشن پلان ترتیب دے رہی ہے۔

تحریک انصاف تو گذشتہ چار سال سے حکومت مخالف دھرنوں اور جلسوں کا آتش فشاں پھوڑتی رہی لیکن پیپلز پارٹی نے خلاف توقع مفاہمی سیاست کا قالین طاہرالقاردی کے احتجاجی کنٹینر پر ڈال کر جموریت کی ٹرین کو کسی بھی نامعلوم مقام پر روکنے کا نوٹس جاری کر دیا ہے۔

 بظاہر عوامی پذیرائی رکھنے والی دینی و سیاسی جماعتوں کا سانحہ ماڈل ٹاؤن پر چلائی جانے والی تحریک قصاص پر حصہ بننا پنجاب حکومت کے سومنات پر ایک بڑے حملے کی تیاری ہے۔ احتجاجی یلغار کو روکنے کے لئے حکومت بھی اپنی تیاری میں ہے۔

 سترہ جنوری کو مال روڈ پر کیا احتجاجی منظر پیش کیا جائے گا، تمام سیاسی جماعتیں اس پر حکمت عملی مرتب کر رہی ہیں لیکن عمران خان اور آصف علی زرداری مظاہرین سے خطاب کے لئے احتجاجی کنٹینر پر بیک وقت جلوہ افروز نہیں ہوں گے۔

loading...
loading...