بچوں کے ساتھ زیادتی کے مسئلہ پر کنور کا جرات مندانہ اقدام  

knorri

بچوں کے ساتھ زیادتی اور جنسی ہراسگی، یہ دو ایسے الفاط ہیں جو گذشتہ کچھ عرصے سے سوشل میڈیا پر وائرل ہیں۔ ہیش ٹیگ ‘می ٹو’ کے ذریعے کئی ہالی وڈ اسٹارز نے اعلی شخصیات کے ہاتھوں اپنے ساتھ استحصال پر آواز اٹھائی اور عوام میں شعور پیدا کیا۔

اسی طرح، زینب کیس کے بعد پاکستان میں بھی بچوں کے ساتھ زیادتی جیسے سنگین واقعات کے خلاف سوشل میڈیا پر انقلاب برپا ہے۔ لوگ نا صرف ملک بھر میں بچوں سے زیادتی کے خلاف احتجاج بلکہ حکومت سے مجرموں  کے خلاف سخت سے سخت ایکشن لینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

میڈیا بھی اس لعنت کے خلاف عوامی شعور بیدار کرنے میں اپنا کردار ادا کررہا ہے، خاص کر والدین کو اس حوالے سے بھرپور آگاہی دی جارہی ہے کہ کس طرح اپنے بچوں کو ہراسگی سے محفوظ رکھا جاسکتا ہے۔

یہ بات عام ہے کہ جنسگی ہراسگی کے  واقعات میں سے صرف چند ہی رپورٹ ہو پاتے ہیں۔ جبکہ زیادہ تر متاثرین اپنے خاندانی وقار کو مجروح ہونے سے بچانے کے لئے خاموشی اختیار کرلیتے ہیں۔ لیکن اب وقت آن پہنچا ہے کہ اس جھجک کو ختم کرتے ہوئے بچوں سے اس کے متعلق بات کی جائے۔

کنور پاکستان نے اس حوالے سے ایک جرات مندانہ قدم اٹھاتے ہوئے  #AikZarooriBaat کے نام سے مہم کا آغاز کیا ہے۔ اس مہم کا مقصد والدین کو اپنے بچوں کے ساتھ بات چیت شروع کرنے میں مدد فراہم کرنا ہے تاکہ وہ خود اپنی حفاظت کرنے کے قابل ہوجائیں۔

اس مہم کا آغاز دو ویڈیوز کے ذریعے کیا گیا ہے جس کے مرکزی کردار چکی اور چیٹی ہیں۔ دونوں کرداروں نے بخوبی ایک حساس اور اہم پیغام کو مہذب اور آسان انداز میں بچوں اور والدین تک پہنچایا ہے۔

ویڈیوز میں ‘بیڈ ٹچ’ اور ‘اسٹرینجر ڈینجر’ کے حوالے سے بچوں کو خوبصورت انداز میں آگاہ کیا جارہا ہے۔

اس سنجیدہ مسئلے کو پاکستانی تہزیب اور تمدن کو مد نظر رکھتے ہوئے پیش کرنے پر کنور ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا جانا چاہیئے۔

اگر آپ بھی اپنے بچوں سے اس حوالے سے گفتگو کرنا چاہتے ہیں لیکن آپ نہیں جانتے کہ اس کا آغاز کس طرح کیا جائے تو یہ دو ویڈیوز آپ کے مسائل کا جواب اور حل ہیں۔

دونوں ویڈیوز کو دیکھیں اور اپنے پیاروں کے ساتھ ضرور شیئر کریں۔