آئی جی پنجاب نے زینب کے قتل کی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی

فائل فوٹو

فائل فوٹو

قصورکی آٹھ سالہ بچی زینب سے ذیادتی اورقتل کی رپورٹ آئی جی پنجاب نے سپریم کورٹ میں جمع کرا دی ہے۔

رپورٹ کے مطابق زینب قرآن پڑھنے اپنی خالہ کے گھر گئی لیکن خالہ کے گھر نہ پہنچی۔ جس پر چار جنوری کو رات ساڑھے نو بجے زینب کے اغوا کی رپورٹ درج کرائی گئی۔

رپورٹ درج کرانے کے بعد علاقے میں پولیس نے سرچ آپریشن کیا۔

 رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ سی سی ٹی وی فوٹیج کا معیار بہترنہیں، خراب ویڈیو کوالٹی ہونے کی وجہ سے ملزم کے چہرے کی شناخت نہیں ہوسکی۔