گردے کی پتھری سے پریشان افراد ان گھریلو نسخوں کو آزمائیں

kidney1

گردے میں  پتھر ی ہوجاناایک تکلیف دہ بیماری ہے اس میں مبتلا افراد  کو بہت زیادہ درد برداشت کرنا پڑتا ہے ،لیکن یہ بیماری لاعلاج نہیں ہے اس کا علاج باآسانی  ہوجاتا ہے ،تاہم  ایسی نوبت آنے ہی نہیں دینی چاہئے جس سے انسان   اس تکلیف دہ بیماری میں مبتلا ہو جائے۔

اگر گردے میں پتھری ہو جائے تو فوری اپنے معالج سے مشورہ کریں اور ساتھ ہی ان گھریلوں نسخوں پر بھی عمل کریں،  یقیناً افاقہ ہوگا۔

٭پانی کا زیادہ استعمال

اگر کوئی شخص اس بیماری میں مبتلا ہو تو اسے چاہئے زیادہ سے زیادہ پانی پیئے،کیونکہ گردے میں پتھری ہونے کی ایک وجہ جسم میں پانی کی کمی بھی ہوتی ہے ،اکثر اوقات پانی زیادہ پینے سے پتھری  ٹوٹ جاتی ہے اور آہستہ آہستہ  پیشاب کے ذریعے  باہر نکل آتی ہے ۔

٭انار کا جوس

اس بیماری میں انار کا جوس بھی بہت مفید ہے،یہ گردے میں موجود پتھری کو توڑنے میں مدد کرتا ہے،مریض کو دن میں کم از کم ایک بارایک گلاس انار کا رس پینا چاہئے۔

٭تربوز کا استعمال

لوگ اکثر تربوز کو موسم گرماکے تازے اور رسیلے پھل کے طور پر جانتے ہیں لیکن تربوز طبی لحاظ سے بھی بہت زیادہ صحت بخش ہوتا ہے،یہ جسم میں کیلشیئم اور پوٹاشیئم  بناتا ہے ،جس سے پیشاب میں   تیزابیت ختم ہوتی ہے ،اس کے علاوہ تربوز میں قدرتی طور پر پانی موجود ہوتا ہے   جو جسم میں پانی کی مقدار  کو بڑھاتا ہے۔

(٭لوبیے کے بیج(کڈنی بینز

اپنے نام اور ساخت کی طرح  کڈنی بینز  گردے کی پتھری کیلئے کافی موثر ہوتے ہیں ،یہ فائبر   بناتے ہیں  جو پیشاب کو آسانی  خارج کرنے میں مدد کرتے ہیں۔

٭نمک کا استعمال

اس بیماری میں مبتلا افراد کو چاہئے کہ وہ نمکین کھانوں سے پرہیز کریں ،نمک کی زیادہ مقدار  جسم میں پانی کی مقدار کو متاثر کرتی ہے  ،اس کے علاوہ  یہ گردے میں خرابی کی وجہ بھی بن سکتاہے۔

نوٹ:ان نسخوں کو استعمال کرنے سے پہلےاپنے معالج سے ضرور مشورہ کرلیں  اور  کسی بھی بیماری کی صورت میں ڈاکٹر سے   علاج لازمی کروائیں

Thanks to: organicfacts.net