لہسن کے رس کا بیکٹیریاز پر تجربہ، دس منٹ بعد کیا ہوا

garlic-on-a-table

قدرت نے انسانوں کو کھانے کے لئے لا تعداد نعمتیں عطا کی ہیں، جو بہت سے امراض میں آب حیات کا کام کرتی ہیں۔ ان ہی میں لہسن کا شمار کیا جاتا ہے۔ حفظان صحت کے اصولوں کا دشمن انسان مختلف ذرائع سے اپنی بربادی کو خود دعوت دیتا ہے، لیکن لہسن تنہا انہیں تندرستی سے لطف اندوز ہونے کے مواقع فراہم کرتا ہے۔

لہسن مشروقی کھانوں کا اہم جز ہے اور اکثر کھانے اس کے بغیر نا مکمل سمجھے جاتے ہیں ۔ مغربی ممالک میں بھی لہسن کا استعمال تیزی سے بڑھ رہا ہے اور اب کھانے پینے کی ایسی اشیاء عام مل جاتی ہیں جن میں لہسن استعمال کیا جاتا ہے۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ لہسن کئی بیماریوں خصوصاً دل کے امراض سے بچاؤ میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔

اس کے استعمال سے جہاں بے شمار امراض سے نجات ملتی ہے وہاں یہ جسم میں موجود بیکٹیریاز میں عدم توازن پیدا کرتا ہے۔بلکہ ان بیکٹیریاز کوجو ہمارے لئے مفید ہیں اور ہاضمہ کو درست رکھتے ہیں ان کی تعداد میں اضافہ کرتا ہے اور جو مضر اور بیماری پیدا کر سکتے ہیں ان بیکٹریاز کوختم کرتا ہے۔

اس طرح موسمی اثرات سے جسم محفوظ ہو جاتا ہے ۔ بیکٹریاز پر تجربات شاہد ہیں کہ لہسن کے رس نے انہیں دس منٹ میں ختم کر دیا جبکہ معاون بیکٹریاز کو کوئی نقصان نہ پہنچا۔

اس کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ اس میں قدرتی اینٹی بائیوٹک اجزاء موجود ہیں انسان دیگر اینٹی بائیوٹک سے محفوظ رہ سکتا ہے جب تک کوئی مایوس کن علامات ان کو دعوت نہ دیں۔

نوٹ : یہ مضمون محض عام معلومات کے لئے ہے