جسم میں ظاہر ہونے والی ان 7 تبدیلیوں کو کبھی نظر انداز مت کریں

signsصحت برقرار رکھنے اور مختلف قسم کی بیماریوں سے محفوظ رہنے کی ایک شرط یہ بھی ہے کہ انسان از خود اپنا باقاعدگی سے معائنہ کرتا رہے۔ مثال کہ طور پر 70 فیصد عورتیں بریسٹ کینسر کی شناخت خود کر لیتی ہیں۔ اپنے جسم میں آنے والی نئی اور غیر معمولی تبدیلیوں کو نظر انداز نہ کریں۔

آج ہم آپ کو بتائیں گے کہ صحت برقرار رکھنے کے لئے جسم میں نظر آنے والی کونسی نئی تبدیلیوں پر توجہ دینی چاہیئے۔

وزن

وزن میں تیزی سے آنے والی تبدیلی ہمیشہ صرف کھنے کی زیادتی سے نہیں ہوتی۔ صحت سے متعلق بہت سی پیچیدگیاں وزن میں آنے والی تبدیلیوں کی وجہ ہوسکتی ہیں۔

Related image

تھائیرائڈ گلینڈ میں پیدا ہونے والی خرابیوں کی وجہ سے ہارمونز کا اخراج بڑھ جاتا ہے۔ ہارمونز کا عدم توازن صحت سے متعلق دیگر مسائل پیدا کرتا ہے۔

نیند کی کمی بھی وزن بڑھا دینے میں مدد کرتی ہے۔ مناسب نیند میسر نہ ہونے کی وجہ سے جسم تھکن کا شکار ہوتا ہے تو غیر ضروری چربی جسم میں جمع ہونا شروع ہوجاتی ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ دن میں آٹھ گھنٹے کی نیند ضرور لی جائے۔

ایڈیما

اگر آپ دن کیے اختتام پر اپنے ہاتھوں پیروں یا ٹانگوں پر سوجن محسوس کرتے ہیں تو یہ ایڈیما کی علامت ہے۔ ایڈیما کی متعدد وجوہات ہو سکتی ہیں۔

صبح کے وقت چہرے اور آنکھوں کے نیچے سوجن گرردے سے متعلق مسائل کی نشاندہی کرتی ہے۔ اس کے لئے بھی مکمل طبی معائنہ ضروری ہے۔

ہائی بلڈ پریشر اور امراض قلب جسم کے مختلف حصوں پر سوجن کا باعث بن سکتے ہیں۔ اپنے بلڈ پریشر کو بحال رکھنے اور دل کے ڈاکٹر سے معائنہ لازمی ہے۔

ویریکوز وینز رگوں میں بگاڑ کی ایک علامت ہے جس کی وجہ سے خون کا بہاؤ متاثر ہوجاتا ہے۔ یہ سب سے زیادہ ٹانگوں کی رگوں کے ساتھ ہوتا ہے اس لئے اس کی بناء پر ٹانگوں میں سوجن محسوس ہونے لگتی ہے۔

جسم پر ؑیر معمولی نشانات

اگر آپ کے جسم کے مختلف حصوں پر زخم یا نیل کے نشانات بنا کسی وجہ کے نمایاں ہونے لگیں تو یہ ایک تشویش ناک بات ہے۔ جسم پر ظاہر ہونے والی یہ تبدیلی وٹامن کی کمی یا خون کی دیگر بیماریوں کی بنا پر ہوسکتی ہیں۔

Image result for bruised skin

جسم میں وٹامن سی کی کمی میٹابولزم کی کارکردگی متاثر کر سکتی ہے۔ اس وجہ سے جسم پر مختلف قسم کے نشانات واضح ہو سکتے ہیں۔

جسم کے مختلف اعضاء سے تعلق رکھنے والی خون کی رگوں میں جلن اور سوزش ایک ایسی بیماری ہے جو رگوں کو نقصان پہنچا کر انہیں ختم کرسکتی ہے۔ اس کے نتیجے میں جسم پر نشان نمایاں ہو سکتے ہیں۔

خون جمانے والی خصوصیت رکھنے والے خلیات کی پیداوار میں کمی، تھرموبوسائٹوپینیا نامی بیماری کو جنم دے سکتی ہے۔ اس بیماری سے جسم پر واضح ہونے والی علامات میں جسم پر نشان پڑنا شامل ہے۔

زبان

زبان کا رنگ جسم میں موجود بہت سی بیماریوں کی نشاندہی کرسکتا ہے۔ زبان کی سطح پر سفید رنگ کی پرت یہ نشاندہی کرتی ہے کہ جسم میں کوئی بیماری موجود ہے۔ البتہ اگر یہ پرت باریک ہے تو فکر مندی کی کوئی بات نہیں۔ مگر موٹی پرت کی موجودگی میں ضروری ہے کہ ڈاکٹر سے معائنہ کروایا جائے۔

زبان پر سفید پرت نظام ہضم سے بھی تعلق رکھتی ہے۔ اس علامت کے ساتھ اگر اکثر پیٹ کے درد کی شکایت رہے تو علاج ضروری ہے۔

منہ میں کڑواہٹ اور زبان پر موٹی پیلی پرت اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ جسم کو جگر اور پتے سے متعلق مسائل لاحق ہیں۔

اس کے علاوہ آنتوں میں شدید قسم کا مرض یا جسم میں پانی کی کمی زبان کا رنگ تبلیل کرسکتا ہے۔

آنکھوں کی سفیدی

آنکھوں کی سفیدی کا رنگ بھی جسمانی صحت کے متعلق بہت کچھ بتا سکتا ہے۔ آنکھوں میں موجود سفید حصوں کا عمومی رنگ بلکل سفید ہوتا ہے۔ البتہ اس حصے کا رنگ اگر پیلاہٹ یا سُرخی مائل ہو تو یہ وجوہات ہو سکتی ہیں۔

آنکھوں میں پیلاہٹ ظاہر ہونے کا مطلب جگر میں خرابی ہوسکتا ہے۔

آنکھوں کی سُرخی یا پیلاہٹ آنکھوں کے مختلف امراض کی بناء پر ہوسکتی ہے۔

اس کے علاوہ شدید جسمانی مشقت یا کمپیوٹر کے سامنے دیر تک بیٹھے رہنے سے بھی آنکھوں کا رنگ تبدیل ہو سکتا ہے۔

ناخُن

ناخُنوں کے رنگ میں تبدیلی یا شکل میں بگاڑ خاص وجوہات کی بناء پر ہوسکتا ہے۔

ناخُن پر بھورے، پیلے یا کالے رنگ کے دھبے یا دھاریاں ناخُنوں میں فنگل انفیکشن کی وجہ سے پڑتی ہیں۔

جسم میں وٹامن ڈی، بی1، کیلشیئم یا آئرن کی کمی بھی ناخُنوں میں بگاڑ پیدا کرسکتی ہے۔

ناخُنوں کی کمزوری، بھربھرا پن یا باریک گڑھے صحت سے متعلق مسائل کی بنا پر ہوسکتے ہیں۔

مسوڑھے

اگر مسوڑھے اچانک سُرخ ہوجائیں یا سوجھ جائیں تو یہ ایک تشویشناک بات ہے۔ جسم میں موجود بہت سی بیماریوں کی ایک علامت مسوڑھوں کی صحت خراب ہونا بھی ہے۔

مسوڑھے سے اگر خون رِس رہا ہو یا دانتوں میں ٹھنڈا گرم لگتا ہو تو یہ اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ مسوڑھوں میں موجود باریک جھلی میں جلن اور شوزش ہے۔

ایک اور بیماری جس میں مسوڑھے اپنی جگہ چھوڑ دیتے ہیں اور دانتوں اور مسوڑھوں کے درمیان خلاء رہ جاتا ہے۔ اس خلاء میں کھانے کے ذرات جمع ہو کر تکلیف دیتے ہیں اور دیگر مسائل کا سبب بنتے ہیں۔

مسوڑھوں کا ایک اور مسئلہ دانتوں کی جڑیں کھول کر انہیں حساس بنا دیتا ہے۔ اس کے علاوہ دانتوں کے بیچ خلاء بھی بڑا ہوجاتا ہے۔

ان سب علامات میں مسائل کو بڑھنے سے روکنے اور صحت برقرار رکھنے کے لئے ڈاکٹر سے طبی معائنہ بے حد ضروری ہے۔

Thanks to BrightSide

loading...
loading...