اپنی جلد کے ساتھ یہ 12 چیزیں کبھی نہ کریں

1

ہر انسان کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کی جلد نرم و ملائم اور دکھنے میں خوبصورت لگے اسی لئے وہ کئی طرح کے نسخے اپناتا ہے جن میں سے کچھ نسخے جلد پر مثبت جبکہ کچھ منفی اثرات بھی مرتب کردیتے ہیں۔ آج ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں کہ ڈرمیٹولوجسٹ کے مطابق ہمیں کونسی 12 چیزیں اپنی جلد کے ساتھ کبھی نہیں کرنی چاہئیں۔

آپ بھی جانیئے اور ایسا کرنے سے مکمل اجتناب کیجیئے۔۔

دانے کو کبھی نہ پھوڑیں

1

چہرے پر جب کوئی دانہ نکل جائے تو ہم چاہتے ہیں کہ یہ جلد سے جلد ختم ہوکر غائب ہوجائے اسی لئے ہم سوچتے ہیں کہ اس کو پھاڑ کر جلد جان چھڑائی جاسکتی ہے جبکہ ڈرمیٹولوجسٹ ایسا کرنے سے بالکل سختی سے منع کرتے ہیں کیونکہ جب بھی آپ دانے کو پھاڑتے ہیں تو اس سے انفیکشن اور سوزش کا خطرہ رہتا ہے اسی لئے بہتر ہے کہ اسے خود ہی ختم ہونے دیا جائے۔

سن اسکرین لگائے بناء گھر سے نکلنا

2

آپ اکثر سن اسکرین کا استعمال صرف سمندر والی جگہ پر ہی کرتے ہوں گے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ صرف سمندر والے مقام پر ہی نہیں بلکہ گھر سے جب بھی کہیں جائیں تو اس کو لگانا لازم ہوتا ہے کیونکہ ڈرمیٹولوجسٹ بتاتے ہیں کہ سن اسکرین کا استعمال اسکن کینسر، ڈارک لائنز اور رنکلز سے بچاتا ہے۔

دھوپ میں چہرے پر لیموں کبھی نہ لگائیں

3

عام طور پر ہم ایکنی اور پمپلز کے خاتمے کے لئے لیموں کے جوس کا استعمال کرتے ہیں لیکن کیا آپ جانتے ہیں اگر جلد پر لیموں لگا کر دھوپ میں نکلا جائے تو اس کے کئی نقصانات ہیں اور کئی مہینوں تک جلد پر اس کے منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ اسی لئے لیموں لگا کر کبھی دھوپ میں نہ نکلا جائے۔

سفید سیاہی سے ٹیٹو کبھی نہ بنوائیں

4

جیسا کہ ہم سب جانتے ہیں جلد پر جو ٹیٹو بنوائے جاتے ہیں وہ مستقل ہوتے ہیں اور لیزر ٹریٹمنٹ کے علاوہ اس کو مٹانے کا کوئی علاج نہیں ہے۔ ڈرمیٹولوجسٹ کے مطابق سفید سیاہی سے بنائے گئے ٹیٹو لیزر ٹریٹمنٹ کے بعد بھی سفید نشان چھوڑ جاتے ہیں اسی لئے ہمیشہ کالے یا نیلے رنگ سے ہی ٹیٹو بنوایا جائے۔

ان پروڈکٹس کا استعمال کبھی نہ کریں جن میں شامل اجزاء کو چھپایا گیا ہو

5

انسان کی جلد بہت ہی حساس اور جلد متاثر ہونے والی ہوتی ہے اسی لئے کوئی بھی ایسی جادوئی چیز کا استعمال اپنی جلد پر نہ کریں جس کے اجزاء کو سیکریٹ رکھا گیا ہو۔

خطرناک ٹریٹمنٹس سے اجتناب کریں

6

ڈرمیٹولوجسٹ کے مطابق مارکیٹ میں اب کچھ ایسے پروڈکٹس بھی موجود ہیں جن کو اگر صحیح طریقے سے استعمال نہ کیا جائے تو یہ جلد کو انتہائی خطرناک نقصان پہنچا سکتے ہیں اسی لئے اگر آپ کچھ کروانے کا ارادہ رکھتے بھی ہیں تو پہلے کسی ڈرمیٹولوجسٹ سے رابطہ کریں۔

اپنی جلد کو دبائیں نہیں

7

ہم تقریباً سب ہی لوگ دن میں کسی نہ کسی وقت آئینے کے سامنے کھڑے ہوکر اپنی جلد کو غور سے دیکھتے ہوں گے اور زیادہ غور سے دیکھنے کے لئے اس کو دباتے اور کھینچتے ہیں ایسا کرنے سے بھی جلد کو شدید نقصان پہنچتا ہے اس سے جلد پر کالے کالے نشانات پڑ جاتے ہیں۔

کسی نئے تل یا مسّے کو دانہ سمجھ کر چھیڑنا

8

اگر آپ جلد پر ابھرے کسی تل یا مسّے کو دانہ سمجھ کر چھیڑیں گے تو ایسا کرنا بھی کافی خطرناک ہوسکتا ہے کینسر تک کا باعث بن سکتا ہے۔ اسی لئے جب کوئی ایسی چیز چہرے پر ابھرے تو اسے چھیڑنے کے بجائے ڈرمیٹوجسٹ کو دکھائیں اور حفاظت سے چھٹکارا پائیں۔

گہرے (گٹھلی والے) دانوں کو مت نوچیں

9

اگر آپ کے چہرے پر بہت زیادہ درد دینے والے گہرے (گٹھلی والے) دانے نکل جائیں تو ان کو نوچنے سے مکمل اجتناب کریں کیونکہ ایسا کرنے سے انفیکشن کا خطرہ رہتا ہے اور یہ چہرے کو شدید نقصان پہنچا سکتا ہے۔

زیادہ صابن استعمال نہ کریں

10

جلد سے مکمل صفائی حاصل کرنے کے لئے ہم اکثر صابن کا بہت زیادہ استعمال کرتے ہیں جبکہ ایسا کرنا کسی بھی صورت مناسب نہیں۔ کیونکہ ایسا کرنے سے چہرے کی رونق ماند پڑنے کے ساتھ ساتھ انفیکشن ہونے کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔

کبھی اپکسپائرڈ پروڈکٹس کا استمال نہ کریں

11

جلد کو بہتر بنانے کے لئے جو پروڈکٹس بنائے جاتے ہیں ان میں مختلف کیمیکلز کا استعمال کیا جاتا ہے جن کی اگر معیاد ختم ہوجائے تو وہ انتہائی خطرناک شے میں تبدیل ہوجاتے ہیں اسی لئے کبھی بھی ایکسپائرڈ پروڈکٹس کا استعمال جلد پر نہ کریں۔

جلد پر کسی نوکیلی شے کا استعمال نہ کریں

12

اکثر ہم دانوں سے نجات حاصل کرنے کے لئے ان کو پھاڑنے میں ہی عافیت جانتے ہیں اور دانوں پر کسی نوکیلی چیز کو استعمال کرلیتے ہیں جبکہ ایسا کرنا بے حد خطرناک ہوسکتا ہے کیونکہ نوکیلی چیز جیسے سوئی اور بال پن وغیرہ جلد میں انفیکشن کا باعث بن سکتی ہیں۔

Thanks to Readers Digest