ایل این جی کیس :شاہد خاقان عباسی کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:احتساب عدالت نے ایل این جی کیس میں نیب کی استدعا منظورکرتے ہوئے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے جسمانی ریمانڈ میں 15اگست تک توسیع کردی ۔

اسلام آبا د کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ایل این جی اسکینڈل کیس کی سماعت کی ۔

اس موقع پر نیب ٹیم نے ریمانڈ مکمل ہونے پر سابق وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کو احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا۔

مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

نیب نے سابق وزیراعظم کے جسمانی ریمانڈ میں مزید توسیع کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ شاہد خاقان سے ابھی تفتیش کرنا ہے مزید ریمانڈ دیا جائے۔

نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ 15 اگست تک تو عید کی چھٹیاں ہیں جس پر جج احتساب عدالت نے کہا کہ کوئی بات نہیں چھٹی کے دن سماعت کرلیتے ہیں ۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جتنا جسمانی ریمانڈ آپ دینا چاہتے ہیں دے دیں،اس پر جج احتساب عدالت نے کہا کہ آپ وکیل کرلیں جو جسمانی ریمانڈ کی مخالفت کر سکے ۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ میں اپنی وکالت خود ہی کروں گا،میں اس وقت وزیر تھا ایل این جی کیس خودبہتر سمجھتا ہوں ،نیب والوں کو بھی ایل این جی سمجھاﺅں گابس کچھ وقت چاہئے۔

عدالت نے شاہد خاقان عباسی کے جسمانی ریمانڈ میں مزید14 روز کی توسیع کرتے ہوئے سابق وزیراعظم کو 15 اگست کو پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

کمرہ عدالت میں شاہد خاقان عباسی سے ان کی فیملی اور لیگی رہنماﺅں نے ملاقات کی ۔

اس موقع پر صحافی کے سوال سینٹ الیکشن ہیں کیا کہیں گے جس کے جواب میں شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ دوپہر کو فیصلہ ہو جائے گا،جمہوریت کی فتح ہو گی ۔

loading...
loading...