گجرات کے ڈسٹرکٹ جیل میں تہرے قتل کیس کےمجرم کوپھانسی

فائل فوٹو

فائل فوٹو

گجرات :گجرات کے ڈسٹرکٹ جیل میں تہرے قتل کیس کےمجرم کوپھانسی دے دی گئی۔

کھوڑی میر پور تہرے قتل کیس کے مجرم عثمان نذیر کو تختہ دار پر لٹکادیا گیا 13نومبر 2004 کی سہ پہر مجرم عثمان نذیر نے فائرنگ کرکے اپنے ہی گاؤں کے رہائشی اورنگ زیب، شوکت اور سرفراز کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا ۔

تھانہ کڑیانوالہ میں محمد حنیف کی مدعیت میں عثمان نذیر اس کے والد محمد نذیر بھائی شفاقت نذیر سمیت 2نامعلوم افراد کیخلاف قتل کا مقدمہ درج ہوا ۔

اس وقت کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ سیشن جج گجرات چوہدری محمد اقبال نے 31 اگست 2009کو فیصلہ سناتے ہوئے مجرم عثمان نذیر کو تہرے قتل کیس میں 3بار سزائے موت اور 3لاکھ جرمانہ کی سزا سنائی جبکہ مقدمہ میں ملوث مجرم کے باپ اور بھائی کو بری کر دیا تھا ۔

جس کے بعد مجرم نے ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی جسے ہائیکورٹ نے 5مئی 2015 کو رد کر دیا ،17 مئی 2018کو سپریم کورٹ سے بھی مجرم کی سزا کیخلاف اپیل مسترد کردی گئی ۔

مجرم نے صدر پاکستان کو رحم کی اپیل کی مگر یکم اپریل 2019 کو صدر پاکستان نے بھی رحم کی اپیل مسترد کردی ۔

جس کے بعد سپرنٹنڈنٹ ڈسٹرکٹ جیل گجرات کی جانب سے مجرم کی سزا پر عملدرآمد کیلئے ڈسٹرکٹ سیشن جج کو ریفرنس بھیجا گیا ۔

عدالت نے مجرم کو 18جون کو سزائے موت کیلئے بلیک وارنٹ جاری کئےتھے ۔

loading...
loading...