سپریم کورٹ :نجی اسکولز کے حق میں لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے فیسوں میں اضافے سے متعلق کیس کا فیصلہ سنا دیا  ،نجی اسکولز کے حق میں لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قراردیتے ہوئے سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ برقراررکھا ، فیسوں میں 20 فیصد کمی کا عبوری حکم بھی واپس لیتے ہوئے فیس میں سالانہ 5فیصد اضافہ کا حکم دیا ۔

والدین جیت گئے، نجی اسکول مالکان ہارگئے، نجی اسکولزمیں پڑھنے والے بچوں کے والدین کوریلیف مل گیا،عدالت عظمی نے والدین کے حق میں بڑا فیصلہ  سنادیا۔

سپریم کورٹ میں نجی اسکولوں کی فیسوں میں اضافے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔

 سپریم کورٹ نے نجی اسکولز مالکان کی فیسوں میں سالانہ 15 سے 20 فیصد اضافہ کرنے کی استدعا مسترد کردی، جسٹس اعجازالاحسن نے مختصرفیصلہ پڑھ کرسنایا ۔

 سپریم کورٹ نے نجی اسکولز کے حق میں آنے والا لاہورہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم جبکہ سندھ ہائیکورٹ کے فل بینچ کا فیصلہ برقراررکھا ۔

فیصلےمیں عدالت نے فیسوں میں 20فیصد کمی سمیت تمام عبوری حکم واپس لیتے ہوکہا کہ اسکولز فیس میں سالانہ 5فیصد ہی اضافہ ہوگا اورنجی اسکولزقانون کے مطابق ہی فیس وصول کرسکتے ہیں ،نجی اسکول کو5 فیصد سے 8 فیصد تک اضافے کا جوازپیش کرنا ہوگا ۔

 عدالت نے نجی اسکولزکوفیس کمی سے لیکرآج تک کم شدہ فیس بطوربقایاجات لینے سے بھی روک دیا ۔

جسٹس فیصل عرب نے فیسوں میں 5فیصد اضافے کی حد سے اختلاف کیا کیس کا تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا ۔

 

loading...
loading...