ڈپٹی کمشنرذمہ داری کےاہل نہیں،آج سے ان کا کیریئرختم:سپریم کورٹ

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:وزیرریلوے شیخ رشید کیخلاف توہین عدالت کیس میں سپریم کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ ڈپٹی کمشنر ذمہ داری کے اہل نہیں ، آج سے ان کا کیریئرختم ،توہین عدالت کا نوٹس جاری کریں گے، اڈیالہ جیل بھجوا دیا جائے گا۔

جسٹس عظمت سعید شیخ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے وفاقی وزیرشیخ رشید کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت کی، عدالتی حکم پرکمشنراورڈپٹی کمشنرراولپنڈی پیش ہوئے ۔

جسٹس عظمت سعید نے ڈپٹی کمشنر راولپنڈی کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ کیا عدالتی حکم انگریزی میں پڑھ لیتے ہیں؟کیوں نہ توہین عدالت کا نوٹس دیا جائے۔

ڈپٹی کمشنر راولپنڈی نے مؤقف اپنایا کہ انکے نزدیک توکوئی توہین عدالت ہوئی ہی نہیں ہے، دیوار گرانے کا حکم انہوں نے نہیں دیا۔

  جسٹس اعجازالاحسن نے کہاکہ اسسٹنٹ کمشنر موقع پرموجود تھا جھوٹ کیوں بولتے ہیں ۔

 جسٹس عظمت سعید نے کمشنر اور ڈپٹی کمشنر راولپنڈی کی سرزنش کرتے ہوئے کہاکہ کیا آسیب نے آکر دیوارگرا دی، ڈپٹی کمشنر ذمہ داری کے اہل نہیں کوئی اورکام کریں آج سے ان کا کیریئر ختم ۔

 ڈپٹی کمشنر نے وقوعہ کے وقت لاہورمیں ہونے کا مؤقف اپنایا تو جسٹس اعجازالاحسن نے ریماکس دیئے کہ لاہور مریخ پرتونہیں۔

 جسٹس عظمت سعید نے ڈپٹی کمشنرکیخلاف توہین عدالت اور اڈیالہ جیل بھجوانے کے ریمارکس دیئے جس پرڈپٹی کمشنرنے غیرمشروط معافی کی استدعا کی جسے بینچ نے مسترد کردیا۔

 گرلزگائیڈ کی وکیل نے بتایاکہ 15اپریل کوشیخ رشید کی کال پردیوارگرائی گئی۔

وکیل پنجاب حکوت نے دیوارکی تعمیرمکمل ہونے اور گیس کنکشن جلد کرنے کی یقین دہانی کرواتے ہوئے بینچ سے رحم کی اپیل کی جس پرجسٹس اعجازالاحسن نے کہا کسی کوخوش کرنے کیلئے عدالتی حکم عدولی کی گئی۔

دوران سماعت سابق اٹارنی اشتراوصاف کی طبعیت بگڑگئی جس پرعدالت نے زیرسماعت کیس سمیت کورٹ روم نمبر2 کے تمام مقدمات ملتوی کردیئے۔

مسلم لیگ ن کے صدر  شہبازشریف ضمانت منسوخی کیس بھی بغیر کارروائی ملتوی کردیا گیا۔

loading...
loading...