نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو اسلام قبول کرنے کی دعوت

Untitled-1

کرائسٹ چرچ: نیوزی لینڈ میں ایک مسلمان نوجوان شہری نے وزیرِ اعظم جیسنڈا آرڈرن سے ملاقات کر کے ان کو اسلام قبول کرنے کی دعوت دے دی۔

تفصیلات کے مطابق نوجوان شہری نے ملاقات کے دوران وزیرِ اعظم جیسنڈا کو اسلام کی دعوت دیتے ہوئے کہا گزشتہ تین روز سے اللہ سے ایک ہی دعا کر رہا ہوں کہ دوسرے لیڈر بھی آپ سے سیکھیں۔

نوجوان کا کہنا تھا کہ ان کی خواہش ہے کہ ایک دن وہ یہ سنے کہ نیوزی لینڈ کی وزیرِ اعظم اسلام میں داخل ہو گئی ہیں۔ نوجوان کی بات سُن کر وزیراعظم جیسنڈا کے چہرے پر مسکراہٹ بکھر گئی۔

خیال رہے کہ نوجوان شہری کا اشارہ مسلمانوں سے اظہار یک جہتی کے سلسلے میں اٹھائے جانے والے ان اقدامات کی طرف تھا جس نے ساری دنیا کو حیران کر دیا ہے۔

یاد رہے کہ مسلمانوں سے بے مثال اظہار یک جہتی پر نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن کو قتل کی دھمکیاں بھی ملنے لگی ہیں۔ انھیں سوشل میڈیا پر پیغام میں گن کی تصویر بھیجی گئی جس پر لکھا تھا اب آپ کی باری ہے۔

دو دن قبل نیوزی لینڈ کے خبر رساں اداروں نے اپنے صفحہ اوّل پر خبر شائع کرنے کی بجائے ‘سلام، ہمیں یاد ہے’ اور شہدا کے نام لکھ کر مسلمانوں سے اظہار یک جہتی کر کے نئی نظیر قائم کی۔

loading...
loading...