دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا، وزیراعظم عمران خان

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:وزیراعظم نے نیوزی لینڈ میں مساجد پر دہشتگردحملوں کو مذمت کرتے ہوئے کہاکہ دہشتگرد حملوں پرشدید صدمہ ہوا ، دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا ۔

تفصیلات کے مطابق، جمعے کو وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں مساجد پرہونے والوں دہشتگرد حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت اور افسوس کا اظہارکیا ۔

 وزیراعظم نے اپنے ٹوئٹ میں کہاکہ دہشتگرد حملوں پرشدید صدمے میں ہوں ،دہشتگردی کا کوئی مذہب نہیں، حملے میں جاں بحق افراد اوران کے اہلخانہ کے دعاگوہیں ۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کے بڑھتے واقعات کی ذمہ داری نائن الیون کے بعد اسلام مخالف پروپیگنڈے پر عائدہوتی ہے، جس میں کسی بھی دہشت گردی کا الزام اسلام اور سوا ارب مسلمانوں پر لگادیا جاتا ہے، یہ سب جان بوجھ مسلمانوں کی جائز سیاسی جدوجہدکو دبانے کیلئے کیاگیا۔  

وزیراعظم عمران خان کے علاوہ دیگر سیاسی رہنماؤں نے بھی  حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے  کہا پوری دنیا کو دہشتگردی کیخلاف ایک صفحہ پر آنا ہوگا، دہشتگردی ایک ناسور ہے جسے ختم کرنا ہوگا۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے بھی حملے کی مذمت کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین سے اظہارتعزیت کیا ۔

وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے بھی مذمت کرتے ہوئے افسوس کا اظہارکیا اورکہا کہ افسوسناک گھڑی میں نیوزی لینڈ عوام کے ساتھ ہیں ، پاکستان ماضی میں اسی کرب سے گزرا اس صدمہ کا درد محسوس کرسکتا ہے خوش قسمتی سے بنگلادیش کی ٹیم کرکٹ باحفاظت نکلنے میں کامیاب ہوئی ۔

ترجمان دفترخارجہ نے بھی حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان ہائی کمشنر مقامی انتظامیہ سے مکمل رابطے میں ہیں ۔

یاد رہے نیوزی لینڈکےشہرکرائسٹ چرچ میں 2مساجد میں مسلح افراد کی جانب سے فائرنگ کی گئی ،حملے میں اب تک 40 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں، حملہ آوروں نے النور مسجد اور لِین وڈ میں نماز جمعے کے دوران نمازیوں کونشانہ بنایا۔

بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم بھی حملے کےوقت مسجدمیں موجودتھی تاہم وہ محفوظ رہی۔

loading...
loading...