وزیر خزانہ کی زیر صدارت مالیاتی کمیشن کا پہلا اجلاس ختم

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:وزیر خزانہ اسد عمرکی زیر صدارت مالیاتی کمیشن کا پہلا اجلاس ختم ہوگیا، نئے مالیاتی ایوارڈ سے متعلق مختلف پہلوؤں پر غور کیا گیا۔

وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت ہونے والے قومی مالیاتی کمیشن کے پہلے اجلاس میں نئے مالیاتی ایوارڈ پر غور کیا گیا۔

اجلاس میں صوبوں کے وسائل کی منتقلی ،فاٹا میں سازگار کاروباری ماحول اور دیگر امور پر مشاورت کی گئی جبکہ قومی مالیاتی کمیشن کے پہلے اجلاس میں 6گروپس بھی تشکیل دے دیئے گئے۔

وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا کہ 18ویں  ترمیم کو تسلیم کرتے ہیں،18ویں ترمیم کورول بیک کرنے کی کوئی پالیسی نہیں ،یہ صوبوں اوراین ایف سی کی درست سمت میں اہم قدم ہے۔

سندھ نے گڈزپرجی ایس ٹی وصولی کے اختیارات کا مطالبہ کیا،مراد علی شاہ نےکہا 7ماہ کے دوران صوبوں کو پچھلے سال سے کم پیسے ملے ،موجودہ صورتحال میں سندھ کو ایک سو چار ارب کمی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

وزیرخزانہ پنجاب ہاشم بخت نے بھی گزشتہ سال کی نسبت کم وصولیوں کی تصدیق کی اور کہاکہ تمام صوبوں کو ملکی موجودہ چیلنجز کو سامنے رکھ کرسوچنا ہوگا۔

loading...
loading...