سینیٹ میں وزراکی مسلسل غیرحاضری پر وزیراعظم سے جواب طلب

فائل فوٹو

فائل فوٹو

اسلام آباد:سینیٹ میں وزراء کی مسلسل غیرحاضری پرچیئرمین سینیٹ  صادق سنجرانی نے وزیراعظم عمران خان سے جواب طلب کرلیا ۔

چیئرمین سینیٹ کہتے ہیں وزراء نے تاخیر سے آنے کووتیرہ ہی بنا لیا ہے قائد ایوان وزیراعظم کو لکھ کر ناپسندیدگی کا اظہارکریں ، اپوزیشن نے واک آؤٹ بھی کیا

جمعے کو چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت سینیٹ کااجلاس شروع ہوا تواپوزیشن اراکین نے وزراء کی عدم حاضری پر چیئرمین سینیٹ کی توجہ دلائی اور اجلاس سے واک آؤٹ کرگئے ۔

چیئرمین سینیٹ نے غیرحاضری پربرہمی کا اظہارکرتے ہوئے کہاکہ وزرا ءوقت پرکیوں نہیں آتے؟ تاخیر سے آنے کا وتیرہ ہی بنا لیا گیا ایسے کیسے چلے گا؟ ایوان کے تقدس کا خیال رکھا جائے ۔

چیئرمین سینیٹ نے قائد ایوان کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ شبلی فراز وزیراعظم کوبتائیں ان کے وزرا وقت پرنہیں آتے لکھ کر بھیجیں اور ناپسندیدگی کا اظہاربھی کریں ۔

شبلی فرازنے وزراء کے کچھ دیرمیں پہنچنے کا بتایا ، سینیٹرجاوید عباسی نے قائمہ کمیٹی قانون وانصاف کی بلیک لسٹ کی رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہاکہ کمیٹی نے معاملے پرکام کیا ۔

ایف آئی اے اور وزارت داخلہ سے لوگوں کوسفرسے روکنے جانے کا سوال کیا تو بتایا گیا اس کیلئے کوئی لیگل کورموجود نہیں ہے اوربلیک لسٹ کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے کمیٹی نے بلیک لسٹ ختم کرنے کی تجویزدی ہے ۔

سینیٹر جاوید عباسی نے قائداعظم یونیورسٹی کوماڈل ویلج بنانے میں تاخیرکا توجہ دلاو نوٹس پیش کیا جس پر وزیرمحصولات حماد اظہرنے سی ڈی اے کی نااہلی قراردیتےہوئے کہا کہ اہم معاملے پرخصوصی کمیٹی کا اجلاس آج ہے ،چیئرمین سینیٹ نے معاملہ متعلقہ کمیٹی کوبھجوا دیا ۔

loading...
loading...